Friday , December 15 2017
Home / Top Stories / کنٹراکٹ شادیوں کا ریاکٹ بے نقاب، قاضی ، دلال، عرب باشندے گرفتار

کنٹراکٹ شادیوں کا ریاکٹ بے نقاب، قاضی ، دلال، عرب باشندے گرفتار

پرانے شہر میں شادی کے نام پر کمسن غریب مسلم لڑکیوں کے استحصال کے خلاف سٹی پولیس کی کارروائی

حیدرآباد ۔ /20 ستمبر (سیاست نیوز) کم عمر لڑکیوں کے کنٹراکٹ میاریج کے ایک بڑے ریاکٹ کو بے نقاب کرتے ہوئے ساؤتھ زون پولیس نے 20 افراد بشمول اومانی ، قطری باشندوں کے علاوہ ممبئی کے صدر قاضی اور مقامی دلالوں کو گرفتار کرلیا ۔ جاریہ سال اگست میں علاقہ فلک نما میں ایک کم عمر لڑکی کی معمر عرب شہری سے نکاح اور بعد ازاں اس کا بیرونی ملک میں استحصال کے واقعہ کے بعد حیدرآباد سٹی پولیس نے اس کا سخت نوٹ لیتے ہوئے دلالوں اور قاضی کے نیٹ ورک کو توڑنے کی غرض سے خصوصی ٹیمیں تشکیل دی تھیں جس کے تحت مقامی دلالوں اور لاج مالکین کو گرفتار کرلیا گیا ۔ کمشنر پولیس حیدرآباد مسٹر مہیندر ریڈی نے بتایا کہ کم عمر لڑکیوں کی عرب شیخوں کی شادیوں کے خلاف اب تک کی بڑی کارروائی میں ساؤتھ زون پولیس نے چائیلڈ میاریج میں ملوث ہونے والے 5 اومانی باشندے ال مایاحی حبیب علی عیٰسی ، الصالح طالب حُمید علی ، ال عبیدانی جمعہ شنون سلیمان ، ال صالحی ناصر خلیفہ حامد ، القاسمی حسن مظاعل محمد اور قطر سے تعلق رکھنے والے عمر محمد سراج عبدالرحمن ، حمد جابر الکواری اورصافیلدن محمد محمدنور صالح کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فرضی دستاویزات ، نکاح نامے اور تلبیسی شخصی میں ملوث ہونے والے ممبئی کے صدر قاضی فرید احمد خان اور وہاں کے نائب قاضی منور علی کو بھی گرفتار کیا گیا ہے ۔ کمشنر نے کہا کہ 5 مقامی دلال احمد سکندر خان اس کی بیوی غوثیہ بیگم عرف عائشہ ، محمد آصف محمد کو بھی گرفتار کیا گیا ہے جو بڑی شاطرانہ انداز میں خلیج ممالک سے شہر پہونچنے والے عرب باشندوں کیلئے کم عمر غریب مسلم لڑکیوں کی نشاندہی کرتے ہوئے ان کی شادی کرارہے تھے ۔

مہیندر ریڈی نے کہا کہ غریب لڑکیوں کے والدین کو عرب شیخ سے شادی کرنے پر روشن مستقبل ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے انہیں دھوکہ دے رہے تھے ۔ عرب شیخوں کی حیدرآباد ایرپورٹ پر آمد سے مقامی دلال انہیں گاڑی ، رہائش کا انتظام کرتے ہوئے غریب مسلم لڑکیوں کے انٹرویوز کرایا کرتے تھے اور پسند آنے والی لڑکی سے فی الفور نکاح کرادیا کرتے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد کے مقامی قاضی حبیب علی بھی اس نیٹ ورک میں شامل ہے اور اسے بھی گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ پرانے شہر کے ایک اور قاضی علی عبداللہ رفاعی عرف والٹا رفاعی بھی اس نیٹ ورک کا حصہ ہے اور اس کیس میں مفرور ہے ۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ عبداللہ رفاعی کی گرفتاری کیلئے خصوصی ٹیم تشکیل دی گئی ہے ۔ پولیس نے کم عمر لڑکیوں کے عرب باشندوں کے ساتھ انٹرویو کی اطلاع پر پرانے شہر کے مختلف گیسٹ ہاؤز اور لاجس پر بھی دھاوا کیا ہے اور وہاں کے مالکین کو گرفتار کرلیا گیا ۔

پولیس نے ایف کے پلازما ، غالب ریسیڈنسی ، ایم جے انس گیسٹ ہاؤز اور ون سٹی ڈیولپرس کے مالکین کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ کمشنر پولیس نے کہا کہ چائیلڈ میاریج میں ملوث ہونے والے 48 سرگرم دلالوں کی نشاندہی کی گئی اور 38 دلالوں ، 4 لارج مالکین اور قاضیوں کے خلاف سسپیکٹ شیٹ کھولی گئی ہے اور اس نیٹ ورک میں ملوث تمام ملزمین کی جی او ٹیگنگ کے ذریعہ ان پر کڑی نظر رکھی جائے گی ۔انہوں نے مزید بتایا کہ غریب مسلم لڑکیوں کو چائیلڈ میاریج کے ذریعہ استحصال کرنے کے سلسلے کو ختم کرنے کی غرض سے انہوں نے محکمہ اقلیتی بہبود کو 10 تجاویز روانہ کئے ہیں جن میں بیرونی باشندے کی یہاں کی مقامی لڑکی سے شادی کیلئے پولیس سے نوآبجیکشن سرٹیفکیٹ لازمی ہونا شامل ہے اور عرب باشندے کی جانب سے لڑکی کے نام پر 10 لاکھ روپئے فکس ڈپازٹ کرانے اور دیگر سہولیات شامل ہیں ۔ کمشنر پولیس نے واضح طور پر شہر کے قاضیوں ، دلالوں اور دیگر افراد کو یہ انتباہ دیا ہے کہ اس قسم کی شادیوں میں ملوث ہونے پر ان کے خلاف پی ڈی ایکٹ بھی نافذ کیا جائے گا ۔ کمشنر پولیس نے ڈپٹی کمشنر پولیس ساؤتھ زون وی ستیہ نارائینا اور اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس فلک نما محمد تاج الدین احمد کی اس نیٹ ورک کو بے نقاب کرنے میں اہم رول ادا کرنے پر ان کی ستائش کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT