Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / کنٹراکٹ میاریج کے خلاف مہم کا منصوبہ

کنٹراکٹ میاریج کے خلاف مہم کا منصوبہ

مساجد میں بھی شعور بیداری ۔ رجحان میں کمی کا ادعا
حیدرآباد 22 اگسٹ (پی ٹی آئی) حیدرآباد انتظامیہ نے نابالغ اور کمسن بچیوں کی شادیوں کے خلاف مہم چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ خاص کر خلیجی ممالک کے شہریوں کے ساتھ کنٹراکٹ میاریج کے خلاف کارروائی کا منصوبہ بنایا گیا ہے۔ گزشتہ ہفتہ پرانے شہر کی ایک خاتون نے الزام عائد کیاکہ ان کی 16 سالہ نابالغ لڑکی کی 65 سالہ عمانی شہری کے ساتھ شادی کردی گئی۔ سٹی پولیس کے روبرو شکایت میں مذکورہ خاتون نے الزام عائد کیاکہ ان کی نند اور ان کے شوہر نے 5 لاکھ روپئے کے عوض 65 سالہ عمانی کے ساتھ شادی کرادی ہے۔ جہاں عمان لے جانے کے بعد مذکورہ عمانی شخص ان کی لڑکی کو مختلف قسم کی اذیتیں دے رہا ہے۔ پولیس نے اس سلسلہ میں عمانی شخص کے خلاف کیس درج کرلیا ہے اور ساتھ ہی کمسن لڑکی کو عمان سے واپس لانے کے اقدامات کا آغاز کردیا ہے۔ تحفظ اطفال آفیسر امتیاز رحیم کے مطابق ماضی کے مقابلے میں کنٹراکٹ میاریج کی تعداد میں کافی کمی آئی ہے۔ تاہم ایک مخصوص علاقہ خصوصاً پرانے شہر سے ابھی ایسی شادیوں کی اطلاعات موصول ہورہی ہیں جو تشویش کا باعث ہیں۔ ان کے مطابق اس کی اصل درمیانی ایجنٹ اور بروکرس ہیں جو غریب افراد کی غربت کا استحصال کرکے انھیں خطیر رقم کا لالچ دیتے ہیں اور بدعنوان قاضیوں سے ملی بھگت کے ذریعہ اس طرح کے گھناؤنے کام انجام دیتے ہیں۔ مسٹر امتیاز نے بتایا کہ انھوں نے قاضیوں سے کہہ دیا ہے کہ نکاح پڑھانے سے پہلے وہ لڑکی کی عمر کی تصدیق کرلیں۔ پچھلے دو سال کے اندر ایسے کئی ایک قاضیوں کے لائسنس منسوخ کردیئے گئے ہیں جو اس قسم کی غیر قانونی حرکت میں ملوث ہیں۔ انھوں نے کہاکہ اس سلسلہ میں جلد ہی مساجد سے اس قسم کی شادیوں کے خلاف شعور بیداری مہم چلائی جائے گی تاکہ کمسنی کی شادی اور کنٹراکٹ میاریجس پر قدغن لگائی جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT