Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / کنگس کالونی میں جمع شدہ برساتی پانی سے عوام کا جینا دوبھر

کنگس کالونی میں جمع شدہ برساتی پانی سے عوام کا جینا دوبھر

کئی مقامات پر ہنوز تالاب جیسا منظر، پانی کی نکاسی پر زور
حیدرآباد۔11اکٹوبر(سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میں گذشتہ دنوں ہوئی مسلسل بارش کے بعد جن علاقوں میں بارش کا پانی جمع ہوا تھا ان علاقوں میں فوری راحت کاری خدمات انجام دیتے ہوئے پانی کی نکاسی اور ڈرینیج نظام کو بہتر بنا دیا گیا لیکن شہر ی حدود میں ہی موجود پاش تصور کی جانے والی ایک کالونی کے بعض حصوں کی جو حالت ہے وہ انتہائی نا گفتہ بہ ہو چکی ہے۔ شیورام پلی کے علاقہ میں موجود کنگس کالونی شہر کے چنندہ کالونیوں میں شمار کی جاتی ہیں جہاں بہتر انداز میں تعمیرات اور عالیشان مکانات بنائے گئے ہیں لیکن اس کالونی کے مکین گذشتہ 15یوم سے انتہائی مشکل حالات سے گذر رہے ہیں کیونکہ اس کالونی میں جمع پانی نے مکینوں کا چلنا پھرنا دشوار کر رکھا ہے اور اب یہ حالت ہو چکی ہے کہ اس کالونی میں جمع پانی پر کنجال جمع ہو چکا ہے اور اس صورتحال میں لوگ گھروں سے باہر نکلنے میں خوف محسوس کرنے لگے ہیں۔ اس علاقہ میں رہنے والے کئی لوگ اپنے رشتہ داروں اور کرایہ کے مکانات میں منتقل ہونے پر مجبور ہو چکے ہیں۔پرانے شہر کے علاقہ میں بسائی گئی اس عالیشان کالونی کی اس حالت کی متعدد مرتبہ شکایت کئے جانے کے باوجود بھی صورتحال کو بہتر بنانے کے کوئی اقدامات کئے گئے۔ مقامی مکینوں نے بتایا کہ متعلقہ محکموں کی جانب سے ایک سے زائد مرتبہ صورتحال کا جائزہ لیا جا چکا ہے لیکن کوئی کاروائی نہیں کی گئی جس کے سبب عوام کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔بتایا جاتا ہے کہ یہ علاقہ بم رکن الدولہ سے متصل ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ اس علاقہ میں متعلقہ رکن اسمبلی نے کام کرنے کا پیشکش کیا تھا لیکن بعض سیاستدانوں نے انہیں روک دیا اور مسئلہ کا حل نہیں ہوسکا۔ مقامی جماعت کے رکن اسمبلی نے ہدایت پر دورہ کرتے ہوئے اس علاقہ میں رہنے والے لوگوں کیلئے شادی خانہ میں راحت کاری کیمپ کے آغاز کی پیشکش کی تھی جسے مقامی عوام نے مسترد کردیا۔ علاوہ ازیں انہوں نے واضح طور پر یہ کہا کہ اس پانی کی نکاسی کا فوری انتظام ممکن نہیں ہے۔اس علاقہ میں اب تک جمع پانی سے ایسا محسوس ہو رہا ہے کہ کنگس کالونی پانچواں فیس تالاب میں تبدیل ہو چکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT