Thursday , December 14 2017
Home / Top Stories / کنہیا کمار اور عمر خالد کی سیکوریٹی میں زبردست اضافہ

کنہیا کمار اور عمر خالد کی سیکوریٹی میں زبردست اضافہ

دہلی کی بس میں دستیاب لاوارث بیاگ سے دھمکی آمیز مکتوب اور پستول برآمد
نئی دہلی ۔ 15 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جے این یو اسٹوڈنٹس یونین کے صدر کنہیا کمار کو قبل ازیں فیس بک پر دھمکی دینے والے ایک شخص کا ان کے خلاف تحریر کردہ ایک مکتوب اور ایک پستول آج یہاں آئی ایس بی کی اور جے این یو کے درمیان چلنے والی ایک بس سے دستیاب ہوئی جس کے بعد دہلی پولیس اب کنہیا کمار اور عمر خالد کی سیکورٹی میں اضافہ پر غور کررہی ہے۔ پولیس حکام نے ان دونوں اسٹوڈنٹس لیڈرس کی سیکوریٹی کو فی الفور بڑھانے کی ہدایت کی ہے۔ طلبہ نے دھمکی دینے والوں کے خلاف شکایت درج کروانے یونیورسٹی حکام سے مطالبہ کیا ہے۔ پولیس کے ایک سینئر عہدیدار نے آج کہا کہ کشمیری گیٹ آئی ایس بی ٹی اور جے این یو کے درمیان چلنے والی ایک بس سے مکتوب کے ساتھ اور پستول برآمد ہوئی جب ڈرائیور نے وہاں ایک لاوارث بیاگ کا پتہ چلاتے ہوئے پولیس کو چوکس کیا۔ پولیس اس بیاگ کے مالک کی شناخت کا پتہ چلانے کی کوشش میں کئی افراد سے پوچھ گچھ کی۔ اس بندوق کے ساتھ ایک مکتوب بھی دستیاب ہوا جس میں کہا گیا تھا کہ کنہیا کمار اور عمر خالد کے سر قلم کردیئے جائیں گے۔ ان دونوں طلبہ کو جے این یو کیمپس میں منعقدہ ایک متنازعہ تقریب کے ضمن میں گرفتار کرتے ہوئے ان پر غداری کے مقدمات درج کئے گئے تھے۔ ایک پولیس عہدیدار نے کہا کہ باور کیا جاتا ہیکہ اس شخص نے ہی یہ مکتوب لکھا ہے جس نے قبل ازیں فیس بک پر دھمکی دی تھی کہ مسلح افراد پہلے ہی کیمپس کے اندر پہنچ چکے ہیں اور کسی بھی لمحہ انہیں ہلاک کرنے کیلئے تیار ہیں۔

TOPPOPULARRECENT