Wednesday , November 22 2017
Home / شہر کی خبریں / کنہیا کمار کو فوری رہا کرنے کا مطالبہ

کنہیا کمار کو فوری رہا کرنے کا مطالبہ

تنظیم انصاف تلنگانہ اسٹیٹ کونسل کا اجلاس، جناب سید عزیز پاشاہ کا خطاب
حیدرآباد ۔ 20 فبروری (پریس نوٹ) جے این یو کے واقعات اور پٹیالہ ہاؤز کے پاس جو بدبختانہ واقعات اور وکلاء کی غنڈہ گردی کے مسئلہ کو لیکر کل ہند تنظیم انصاف تلنگانہ اسٹیٹ کونسل نے احتجاجی میٹنگ منعقد کی گئی جس میں جناب سید عزیز پاشاہ کل ہند صدر نے اس بات کی وضاحت کی کہ روہت ویمولا کی خودکشی کے بعد ہندوستان کے ساری یونیورسٹیز میں تمام جمہوری اور سیکولر طاقتوں نے اے بی وی پی اور آر ایس ایس کی ریشہ دوانیوں کے خلاف منظم ہونا شروع کیا جو ایک اہم موڑ ہے۔ مودی حکومت کی پالیسیوں کی مکمل ناکامی کو چھپانے اور روہت ویمولا کیس میں حکومت کی پشیمانی دور کرنے جے این یو میں ایک ڈرامہ کے ذریعہ کنہیا کمار کو 124A دفعہ کے تحت گرفتار کیا گیا جو غیرقانونی اور فاشزم کی طرف جھکاؤ کی اہم مثال ہے۔ انہوں نے کہا کہ جدوجہد آزادی ہند میں جنہوں نے بطور انگریز حکومت کے ایجنٹ کام کیا اور جنہوں نے مہاتما گاندھی کا قتل کیا انہیں کوئی حق نہیں پہنچتا کہ وہ حب الوطن ہونے کی سند مانگیں۔ بڑی خوشی کی بات ہیکہ کنہیا کمار کی غیرقانونی گرفتاری کے خلاف ملک بھر کے تمام یونیورسٹیز میں آواز اٹھارہے ہیں بلکہ ہارورڈ اور آکسفورڈ اور کثیر آفاق یونیورسٹیز کے طلباء بھی کنہیار کمار کے حق میں اظہاریگانگت کئے۔ جلسہ کی صدارت جناب میر احمد علی نے کی۔ ان کے علاوہ جناب منیر پٹیل جنرل سکریٹری تنظیم انصاف تلنگانہ اسٹیٹ جناب سید کلیم الدین عسکر صدر گریٹر حیدرآباد، آنند سکریٹری سیکوریٹی پریس، فیروز، احمدالدین اور عبدالقیوم نے جناب ایس اے رؤف سابق رجسٹرار مانو نے بھی اس احتجاجی جلسہ کو مخاطب کیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT