Saturday , November 25 2017
Home / ہندوستان / کوئلہ اسکام میں سورین اور داسری کو ملزم بنانے سے انکار

کوئلہ اسکام میں سورین اور داسری کو ملزم بنانے سے انکار

خصوصی عدالت میں فرم کے خلاف ایک لاکھ روپئے کا ہرجانہ
نئی دہلی۔/10نومبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک خصوصی عدالت نے آج کوئلہ اسکام کیس میں قانونی چارہ جوئی کا سامنا کرنے والی ایک فرم کی عرضی کو ہرجانہ کے ساتھ مسترد کردیا ہے جبکہ چھتیس گڑھ کول بلاکس کے اختصاص میں مبینہ بے قاعدگیوں کے معاملہ میں اضافی ( ایڈیشنل ) ملزمین کی حیثیت سے سابق مرکزی وزیر کوئلہ شبو سورین اور مملکتی وزیر داسری نارائن راؤ کو طلب کرنے کی درخواست کی گئی ہے۔سی بی آئی کے خصوصی جج بھرت پرشاد نے ملزم فرم جے ایل ڈی ایوت مل انرجی لمیٹیڈ عرضی کو مسترد کرتے ہوئے ایک لاکھ روپئے کا ہرجانہ عائد کیا ہے اور ہدایت دی کہ یہ رقم دہلی لیگل سرویس اتھاریٹی کے پاس جمع کروادی جائے۔ مذکورہ فرم کے وکیل وجئے اگروال نے سابق معتمد کونسل پی سی پاریکھ کی ایک تصنیف کا حوالہ دیا اور بتایا کہ سابق بیورو کریٹ نے کوئلہ بلاکس کے الاٹمنٹ میں سورین اور راؤ کو امتیاز برتنے کیلئے مورد الزام ٹہرایا تھا کیونکہ دونوں سیاستدانوں نے مروجہ قواعد کو نظر انداز کررہا تھا پاریکھ کی تصنیف میں مذکورہ افراد ( سورین۔ راؤ ) کے رول کو واضح کردیا گیا ہے۔ لہذا اس نقطہ نظر سے یہ واضح ہوجاتا ہے کہ سابق  وزراء شیبو سورین اور داسری نارائن راؤ اس تنازعہ میں ملوث ہیں جس کے پیش نظر اضافی ملزمین کی حیثیت سے راؤ اور سورین کو عدالت میں طلب کیا جانا چاہیئے۔ سابق راجیہ سبھا ایم پی وجئے دروا اور دیگر بشمول ان کے فرزند دیویندر ردروا اور سابق معتمد کوئلہ ایچ سی گپتا مذکورہ کیس میں ملزمین ہیں۔ قبل ازیں ان کی ضمانت منظور کرلی گئی ہے اور آج مقدمہ کی سماعت کی گئی ہے۔ عدالت نے 2سینئر عہدیدار کے ایس کروپا اور کے سی سمریا، ایک تاجر منوج کمار جیسوال اور مذکورہ فرم کے خلاف الزامات بھی وضح کئے ہیں یہ کیس چھتیس گڑھ میں فتح پورہ ( ایسٹ ) کول بلاک الاٹمنٹ سے متعلق ہے جس میں فرم کے خلاف دھوکہ دہی، اعتماد شکنی اور کرپشن کے الزامات عائد کئے گئے ہیں جبکہ کیس کی سماعت 16ڈسمبر تک ملتوی کردی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT