Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / کوئی بھی ملک پناہ گزینوں کو واپس نہیں بھیج سکتا ‘ اقوام متحدہ

کوئی بھی ملک پناہ گزینوں کو واپس نہیں بھیج سکتا ‘ اقوام متحدہ

تمام ممالک بین الاقوامی قانون کے پابند۔ اقوام متحدہ ہائی کمیشن برائے پناہ گزین کا بیان
حیدرآباد 8 ستمبر ( پی ٹی آئی ) ایسے وقت میں جبکہ ہندوستان روہنگیا مسلم پناہ گزینوں کو واپس بھیجنے کا منصوبہ رکھتا ہے اقوام متحدہ ہائی کمیشن برائے پناہ گزین نے کہا کہ پناہ گزینوں کو ایسے مقام پر واپس نہ بھیجنے جہاں ان کو خطرہ ہو کا جو اصول ہے وہ تمام ممالک پر لاگو ہوتا ہے ۔ ہندوستان میں روہنگیا مسلمانوں سے متعلق سوال پر پی ٹی آئی کے ایک ای میل کے جواب میں اقوام متحدہ کے ادارہ نے کہا کہ اس اصول کو روایتی بین الاقوامی قانون کا حصہ سمجھا جاتا ہے اور یہ سب ممالک پر لاگو ہوتا ہے چاہے وہ پناہ گزینوں سے متعلق کنونش پر دستخط کرچکے ہوں یا نہ کرچکے ہوں۔ اقوام متحدہ ہائی کمیشن نے کہا کہ ہندوستان بڑے بین الاقوامی انسانی حقوق قوانین کا فریق بھی ہے جن میں سیول و سیاسی حقوق سے متعلق بین الاقوامی کنونشن ‘ خواتین سے امتیاز کے خلاف کنونشن ‘ اور کنونشن برائے حقوق اطفال شامل ہیں۔ مرکزی منسٹر آف اسٹیٹ داخلہ کرن رجیجو نے حال ہی میں کہا کہ روہنگیا چاہے وہ اقوام متحدہ ہائی کمیشن برائے پناہ گزین میں رجسٹر کئے ہوں یا نہ کئے ہوں وہ ہندوستان میں غیر قانونی تارکین وطن ہیں اور انہیں واپس بھیجا جانا ہے ۔ مائنمار راکھین اسٹیٹ کے روہنگیا مسلمان اپنے ملک میں نسل کشی اور مظالم سے تنگ آکر بنگلہ دیش اور ہندوستان کو راہ فرار اختیار کر رہے ہیں۔ گذشتہ چند مہینوں کے دوران ہزاروں روہنگیائی مسلمان فرار ہوچکے ہیں کیونکہ راکھین اسٹیٹ میں فوج کی جانب سے ان کی نسل کشی کی جا رہی ہیں۔ جاریہ ہفتے کے اوائل میں وزیر اعظم نریندر مودی نے مائنمار کا دورہ کیا اور انہوں نے لیڈر آنگ سان سو چی سے بات چیت کی ۔ اس سوال پر کہ آیا مودی کے دورہ مائنمار کے بعد روہنگیا مسلمانوں کے تعلق سے ہندوستان کے موقف میں کوئی تبدیلی آئی ہے کمیشن نے کہا کہ اسے پناہ گزینوں کے تعلق سے موقف میں کے سلسلہ میں حکومت ہند سے کوئی سرکاری اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے ۔ اس نے تاہم کہا کہ ہندوستان سے اقوام متحدہ کمیشن میں رجسٹر کئے ہوئے پناہ گزینوں کو واپس بھیجنے سے متعلق کوئی اطلاع نہیں ہے ۔ ہندوستان میں اقوام متحدہ کمیشن سے رجسٹر 16,500 روہنگیا مسلمان پناہ گزین ہیں اور 40,000 پناہ گزین غیر قانونی طور پر مقیم ہیں۔

TOPPOPULARRECENT