Saturday , January 20 2018
Home / اضلاع کی خبریں / کوبیر میں صفائی انتظامات مکمل ناقص

کوبیر میں صفائی انتظامات مکمل ناقص

کبیر ( ضلع عادل آباد ) /9 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) کوبیر منڈل میں عوام کے درمیان صاف صفائی کے ناقص انتظامات کے تعلق سے برہمی پائی جارہی ہے ۔ اس تعلق سے نمائندہ سیاست نے مسلم سلم محلہ جات کا دورہ کیا تو مقامی عوام نے بتایا کہ امراض پھیلنے کی اہم وجہ ڈرینج کی عدم صفائی ، کچرے کے امبار ، جنگلی جانوروں اور خنزیر کی کثرت ہے ۔ عوام نے گرام پنچ

کبیر ( ضلع عادل آباد ) /9 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) کوبیر منڈل میں عوام کے درمیان صاف صفائی کے ناقص انتظامات کے تعلق سے برہمی پائی جارہی ہے ۔ اس تعلق سے نمائندہ سیاست نے مسلم سلم محلہ جات کا دورہ کیا تو مقامی عوام نے بتایا کہ امراض پھیلنے کی اہم وجہ ڈرینج کی عدم صفائی ، کچرے کے امبار ، جنگلی جانوروں اور خنزیر کی کثرت ہے ۔ عوام نے گرام پنچایت کے عوامی نمائندے اور عہدیداروں پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا اور کہا کہ چند مہینوں سے ان محلہ ج ات کے نالیاں موریوں ، ڈرینج کی صفائی نہیں ہوئی اور نہ ہی کچرا اٹھایا جاتا ہے ۔ کوبیر میں مشترکہ ہندو مسلم آبادی بس اسٹانڈ کے قریب واقع ہے ۔ وہاں وسیع احاطہ میں آبادی کی نالیاں موریاں خنزیر کی بہت بڑی تعداد بنا ہوا ہے ۔ آبادی میں خنزیر کھلے عام گھومتے ہیں ۔ اس آلودہ پانی کی وجہ سے مچھروں کی افزائش میں اضافہ ہو رہی ہے ۔ وہاں پر دینی مدرسہ کے چھوٹے معصوم طلباء کا گذر ہوتا ہے ۔ اسی آبادی میں مسلم کے ساتھ ساتھ دیگر مذاہب کے لوگ بھی رہتے ہیں ۔ سوائن فلو کی وباء سے عوام خوفزدہ تھی ۔ اکثر لوگ وبائی امراض سوائن فلو سے اپنے آپ کو محفوظ رکھنے ماسک لگانے کو ترجیح دیتے رہے تھے ۔ واضح رہے کہ خنزیر سے ہی سوائن فلو اور وبائی امراض متعدی بیماریاں ہو رہی ہے ۔ تیز دماغی بخار ، ملیریا ، ڈینگو جیسے امراض پھوٹ پڑے تھے ۔ سوائن فلو اور مچھروں کی افزائش کی روک تھام کیلئے ٹھوس اقداماتکا ہونا بے حد ضروری ہے اور سوچھ بھارت کا بھی اصل مقصد انسانی زندگی کو وبائی امراض سے محفوظ رکھنا ہے ۔ لہذا عوام نے عوامی نمائندے محکمہ صحت کے عہدیداروں کو یادداشت پیش کی کہ اس طرح کے ناقص صفائی سے امراض پھیلنے کا عوام کو خدشہ ہے ۔ لہذا وبائی امراض کے تدارک اور ان کے پھیلنے کی وجوہات سے واقف کراتے ہوئے لاپرواہی کرنے والے ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا تاکہ انسانی جانوں کو کوئی خطرہ لاحق نہ ہو ۔

TOPPOPULARRECENT