Wednesday , November 22 2017
Home / اضلاع کی خبریں / کوڑنگل میں ڈاکوؤں کی ٹولی سرگرم عمل

کوڑنگل میں ڈاکوؤں کی ٹولی سرگرم عمل

چار مکانات میں سرقہ، ڈاکو سونے کے زیورات اور نقد رقم لیکر فرار

کوڑنگل۔/18مئی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مستقر کوڑنگل میں بس اسٹانڈ کے دامن میں واقع شانتی نگر کالونی میں گزشتہ شب ڈاکوؤں نے یکے بعد دیگرے چار مکانات میں قفل شکنی کرتے ہوئے سونے چاندی کے زیورات اور خطیر نقد رقم وغیرہ کا سرقہ کرکے راہ فرار اختیار کی۔ متاثرین اور پولیس کی بتائی ہوئی تفصیلات کے بموجب شانتی نگر کالونی میں مقیم بھیما شنکر کے افراد خاندان ناقابل برداشت گرمی کی وجہ مکان کی چھت پر آرام کررہے تھے۔ آدھی رات کے وقت ڈاکو مکان کے صدر دروازہ کی قفل شکنی کرتے ہوئے مکان میں داخل ہوکر الماری کو توڑتے ہوئے چھ تولے سونے کے زیورات اور چالیس تولے چاندی کے زیورات اور پانچ ہزار روپئے نقد لے کر فرار ہوگئے۔ اس کے بعد اسی مکان سے متصل واقع وینکٹیا گوڑ کا مکان مقفل تھا اس مکان میں بھی داخل ہوکر دو ہزار روپئے کا سامان چوری کرکے فرار ہوگئے۔ بعد ازاں ملکارجن کے مکان میں تمام لوگ محو خواب تھے ڈاکو پہلے کمرے میں داخل ہوکر دس ہزار روپئے نقد لیکرفرار ہوگئے۔ اسی کالونی میں واقع شبیر کے مکان میں افراد خاندان مکان کو مقفل کرکے رشتہ داروں کے پاس گئے ہوئے تھے موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ڈاکوؤں نے مکان میں داخل ہوکر دو تولے سونے کے زیورات لے کر بھاگ کھڑے ہوئے۔ متاثرین کی درخواست پر سب انسپکٹران پولیس ستیا نارائن ریڈی اور چندرا موہن نے متاثرہ مکانات کا ڈاگ اسکواڈ کے ذریعہ تفصیلی معائنہ کیا اور انگلیوں کے نشانات کا جائزہ لیا گیا۔ ڈاگ اسکواڈ شانتی نگر کالونی سے لاہوٹی کالونی کی جانب ڈاکوؤں کے جانے کی نشاندہی کی۔ پولیس نے بہت جلد ڈاکوؤں کو پکڑنے میں پیشرفت کا ادعا کیا۔

ڈاکٹرس کی لاپرواہی کے سبب خاتون موت و زیست کی کشمکش میں مبتلا
کلواکرتی۔/18 مئی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) کلواکرتی وانی ہاسپٹل کے میاں بیوی ڈاکٹر س کی لاپرواہی اور رقم کے لالچ کے سبب غلط آپریشن کی وجہ سے ایک خاتون موت و زیست کی کشمکش میں مبتلاء ہے جبکہ چند ماہ قبل بھی ایک غلط علاج کے سبب ایک خاتون فوت ہوچکی تھی۔ تفصیلات کے مطابق سوامی گوڑ کی اہلیہ کو چند دن قبل اپینڈکس کا آپریشن کیا گیا دو دن تک ان کی طبیعت نہ سنبھلی تو ڈاکٹر اوما کانت نے انہیں عثمانیہ ہاسپٹل لیجاکر شریک کیا وہاں پر بھی ان کی طبیعت نہیں سنبھلی تو انہیں کیر ہاسپٹل منتقل کیا جس کا تمام خرچ مریضہ کے گھر والوں پر ڈال دیا جارہا ہے اور مریضہ کی اصل حالت سے انہیں لاعلم رکھ کر غلط باتوں کے ذریعہ انہیں بہلایا جارہا ہے۔ آج مریضہ کے گھر والوں کو مریضہ کی تشویشناک حالت کی اطلاع ملی تو وہ وانی ہاسپٹل پہنچ کر معلومات حاصل کرنے کی کوشش کی تو ڈاکٹر نے انہیں ڈرانے دھمکانے کی کوشش کی جس پر مریضہ کے رشتہ داروں نے دواخانہ کے خلاف احتجاج شروع کیا اور دواخانے کے سامنے بیٹھ گئے۔ جس کی اطلاع پولیس کو دی گئی تو سی آئی مسٹر وینکٹ نے ہاسپٹل پہنچ کر تفصیلات حاصل کرتے ہوئے مریضہ کے رشتہ داروں کو سمجھا کر شام 6 بجے بات چیت کیلئے راضی کرلیا کیونکہ اہم ڈاکٹر جوکہ حیدرآباد اپنی ڈیوٹی پر ہیں شام 5بجے تک پہنچنے کا وعدہ کیا ہے جس پر سی آئی کے سمجھانے پر مریضہ کے رشتہ داروں نے شام 6بجے تک کیلئے اپنا احتجاج ختم کیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT