Monday , July 16 2018
Home / اضلاع کی خبریں / کوہیر میں مولانا محمد محمود پٹیل قاسمی کی تدفین

کوہیر میں مولانا محمد محمود پٹیل قاسمی کی تدفین

علماء کے بشمول ہزاروں افراد کی نماز جنازہ میں شرکت
کوہیر۔/4اپریل، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ممتاز عالم دین حضرت مولانا محمد محمود پٹیل قاسمی ناظم دارالعلوم بلال پور و سکریٹری جمعیۃ العلماء ہند تلنگانہ و آندھرا پردیش کا 3 اپریل بروز منگل کو حیدرآباد میں واقع مدرسہ دارالعلوم رحمانیہ میں عصر کی نماز کے بعد آرام کررہے تھے کہ اچانک بے چینی محسوس کرتے ہوئے نیند سے بیدار ہوئے اس کے فوری بعد اسریٰ ہاسپٹل لے جاتے وقت راستہ میں داعی اجل کو لبیک کہا۔ مولانا کے انتقال کی خبر جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی۔ اسی رات تقریباً 11 بجے میت مولانا کے آبائی وطن موضع بلال پور لائی گئی۔ نماز جنازہ سے قبل حضرت مولانا شاہ جمال الرحمن امیر ملت اسلامیہ تلنگانہ و آندھرا پردیش، مولانا سمیع الدین قاسمی نرسا پور، مولانا بائین نائب ناظم مجلس علمیہ تلنگانہ و آندھرا پردیش، مولانا امیر اللہ خان محبوب نگر ، مولانا نورالحق قریشی ،مولانا عبداللہ طیب خیرات آباد، مولانا غیاث الدین رحمانی، مولانا سید اکبر ، مولانا حامد محمد خان امیر جماعت اسلامی ہندتلنگانہ و اڑیسہ، محمد فرید الدین رکن قانون ساز کونسل ریاست تلنگانہ کے علاوہ دیگر علماء کرام نے مولانا محمود پٹیل قاسمی کی علمی ، سماجی، ملی و ثقافتی خدمات کا تذکرہ کرتے ہوئے اظہار تعزیت پیش کیا۔ جلوس جنازہ میں ہزارہا افراد نے شرکت کی۔ محمد عمر احمد صدر ٹی آر ایس کوہیر منڈل ، محمد عبدالوحید، محمد کلیم الدین، مانک راؤ ٹی آر ایس پارٹی انچارج ، محمد معز الدین، محمد عمر فاروق، جاوید جے جے کریشن، سید انجم الدین سیف، محمد باسط، نورالحسن غوری، محمد ناظم الدین غوری، محمد حکیم سنگاریڈی، مولانا سید جہانگیر، محمد عبدالقدیر سرپنچ منیارپلی، محمد محفوظ علی، عبدالرشید، رام کرشنا ریڈی آتما کمیٹی چیرمین، نرسمہلو سابق ضلع پریشد رکن کوہیر منڈل، خواجہ معین الدین، محمد فاروق، محمد عمر فاروق کے علاوہ دیگر موجود تھے۔ مولانا کے پسماندگان میں 5 فرزندان اور 4 دختران کے علاوہ بیوہ شامل ہیں۔ مولانا کے جسد خاکی کو ان کے آبائی قبرستان میں سپرد لحد کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT