Thursday , January 18 2018
Home / عرب دنیا / کویت میں اپوزیشن جلوس روکنے آنسو گیس کا استعمال

کویت میں اپوزیشن جلوس روکنے آنسو گیس کا استعمال

کویت سٹی 3 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) کویت کی پولیس نے آنسو گیس استعمال کی اور اسٹن دستی بم استعمال کئے تاکہ اپوزیشن کے جلوس کو منتشر کیا جاسکے جو نامور ناراض قائد مسلم ال براق کی رہائی کا مطالبہ کررہا تھا۔ وکیل استغاثہ نے کل سابق رکن پارلیمنٹ براق کو 10 دن کے لئے حراست میں لے لینے کا حکم دیا تھا۔ کیونکہ اُنھوں نے مبینہ طور پر عدلیہ کے خلا

کویت سٹی 3 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) کویت کی پولیس نے آنسو گیس استعمال کی اور اسٹن دستی بم استعمال کئے تاکہ اپوزیشن کے جلوس کو منتشر کیا جاسکے جو نامور ناراض قائد مسلم ال براق کی رہائی کا مطالبہ کررہا تھا۔ وکیل استغاثہ نے کل سابق رکن پارلیمنٹ براق کو 10 دن کے لئے حراست میں لے لینے کا حکم دیا تھا۔ کیونکہ اُنھوں نے مبینہ طور پر عدلیہ کے خلاف اہانت انگیز تبصرہ کیا تھا۔ جنوب مغربی کویت سٹی میں کل رات براق کی قیامگاہ پر ہزاروں افراد جمع ہوگئے تھے اور اُنھوں نے قریبی جیل تک جلوس نکالا جہاں سابق اپوزیشن لیڈر زیرحراست تھے۔

پولیس نے اُس وقت مداخلت کی جبکہ ہزاروں احتجاجی قید خانہ تک پہونچ گئے۔ فوج نے اُنھیں منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس اور اسٹن دستی بم استعمال کئے۔ ہلاکتوں کی کوئی اطلاع نہیں ملی۔ چھوٹے پیمانے پر احتجاجی مظاہروں کی بھی تیل کی دولت سے مالا مال ریاست کے دیگر علاقوں سے اطلاع ملی ہے۔ کویتی شہریوں نے کل رات بھی جلوس نکالے تھے کیونکہ دن کے وقت شدید گرمی کا سلسلہ جاری ہے۔ کویت ایک ریگستانی ملک ہے اور مسلمان ماہ رمضان کی وجہ سے روزے رکھ رہے ہیں۔ براق کے مشیر قانونی تمیر الجدائی توقع ہے کہ ایک درخواست پیش کریں گے اور مطالبہ کریں گے کہ اُن کے موکل کو فوری رہا کردیا جائے۔ اپوزیشن قائد پر الزام ہے کہ اُنھوں نے اعلیٰ ترین عدالتی کونسل کی توہین کی تھی اور اِس کے صدرنشین کا مرتبہ گھٹانے کی کوشش کی تھی۔ جلوس میں اپوزیشن گروپس نے اُن کے خلاف کارروائی پر سخت تنقید کرتے ہوئے اُسے غیرقانونی اور سیاسی مفادات پر مبنی قرار دیا۔ براق نے مبینہ طور پر سابق سینئر عہدیداروں بشمول برسراقتدار پارٹی کے ارکان پر لاکھوں ڈالر سرکاری رقومات کا سرقہ کرنے اور اُنھیں غیرقانونی طور پر منتقل کرنے کا الزام عائد کیا تھا۔ اُنھوں نے عدلیہ پر بھی تنقید کی تھی۔

TOPPOPULARRECENT