Friday , August 17 2018
Home / شہر کی خبریں / کڈیم سری ہری کے ریمارکس کی مذمت

کڈیم سری ہری کے ریمارکس کی مذمت

عوام کو اکسانا نامناسب ۔ مقدمہ درج کرنے تلگودیشم کا مطالبہ
حیدرآباد ۔14 مئی ( سیاست نیوز) تلگودیشم نے ڈپٹی چیف منسٹر تعلیم مسٹر کے سری ہری کو ہدف ملامت بنایا اور کہا کہ مواضعات میں پرائیوٹ اسکولس بسوں کے ٹائیروں سے ہوا خارج کردینے جیسے ریمارکس کے سوا کچھ اور نہیں ہیں ۔ تلگودیشم نے ڈپٹی چیف منسٹر کے خلاف کریمنل کیس درج کرنے کا مطالبہ کیا ۔ رکن پولیٹ بیورو تلگو دیشم مسٹر آر پرکاش ریڈی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ کے جی تا پی جی مفت تعلیم فراہم کرنے کا وعدہ اگر حکومت پورا کرتی تو طلبہ خانگی اسکولس میں داخلہ لیکر بسوں میں کیوں سوار ہوتے تھے ۔ انہوں نے حکومت پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے برسراقتدار آنے کے بعد سے اب تک ریاست میں جملہ 4600 سرکاری اسکولس کو بندکروانے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ آیا یہ اقدام انتہائی شرمناک نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حصول تلنگانہ جدوجہد کے موقع پر ٹی آر ایس نے آندھرائی کارپوریٹ اسکولس ‘ کالجس کو بھگا دینے کی باتیں کر کے تلنگانہ عوام کو گمراہ کیا لیکن آج ان آندھرائی کارپوریٹ اسکولس وکالجس کو تحفظ فراہم کررہی ہے اور ان اسکولس و کالجس کیلئے حکومت کی اجازت دے کر ان کو بند کروا دینے اکسانا مناسب نہیں ہے ۔ پولیس کو چاہیئے کہ از خود اس طرح کے ریمارکس کے خلاف کڈیم سری ہری کے خلاف کیس درج کرے ۔ خانگی اسکولس انتظامیہ اور عوام سی معذرت خواہی کا کے سری ہری سے پارٹی پرکاش ریڈی نے مطالبہ کیا ۔

TOPPOPULARRECENT