کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کے قیام کیلئے جدوجہد

کڑپہ /11 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) اردو یونیورسٹی ایکشن کمیٹی کڑپہ اے پی کی جانب سے کلکٹریٹ کڑپہ میں ’’ اردو یونیورسٹی کے قیام پر ایک طویل مدتی بھوک ہڑتال‘‘ پروگرام منعقد ہوا ۔ کثیر تعداد میں کڑپہ کے اردو دان طبقہ اس احتجاج میں شریک رہے ۔ رکن اسمبلی کڑپہ جناب ایس بی امجد باشاہ نے کہا کہ چیف منسٹر آندھراپردیش سری چندرا بابو نائیڈو ن

کڑپہ /11 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) اردو یونیورسٹی ایکشن کمیٹی کڑپہ اے پی کی جانب سے کلکٹریٹ کڑپہ میں ’’ اردو یونیورسٹی کے قیام پر ایک طویل مدتی بھوک ہڑتال‘‘ پروگرام منعقد ہوا ۔ کثیر تعداد میں کڑپہ کے اردو دان طبقہ اس احتجاج میں شریک رہے ۔ رکن اسمبلی کڑپہ جناب ایس بی امجد باشاہ نے کہا کہ چیف منسٹر آندھراپردیش سری چندرا بابو نائیڈو نے اسمبلی میں اعلان کیا تھا کہ کڑپہ میں اردو یونیورسٹی قائم کی جائے گی ۔ اس اعلان پر اہلیان کڑپہ نے بے حد خوشی کا اظہار کیا اور چیف منسٹر کا شکریہ بھی ادا کیا ۔لیکن افسوس کہ چیف منسٹر نے وعدہ خلافی کرتے ہوئے ایک عوامی اجلاس میں کرنول میں اردو یونیورسٹی قائم کرنے کا غیر متوقع اعلان کردیا ۔ جس سے اہلیان کڑپہ عموماً اور محبان اردو خصوصاق دل برداشتہ ہوگئے ۔ ہم نے اپنے شدید غم و غصہ کا اظہار کرنے کیلئے پرامن احتجاج کا راستہ اختیار کیا ہے ۔ صدر اردو یونیورسٹی ایکشن کمیٹی کڑپہ جناب صلاح الدین نے کہا کہ اردو یونیورسٹی کے حصول تک اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے ۔ لائحہ عمل کے طور پر ایک طویل مدتی احتجاج اور بھوک ہڑتالوں کا سلسلہ شروع کیا جارہا ہے ۔ DCC کے صدر جناب نظیر احمد نے کہا کہ اہلیان کڑپہ سے گذارش ہے کہ اپنی مصروفیات کو بالائے طاق رکھ کر جوق در جوق روزانہ کلکٹریٹ کے احاطہ میں صبح 9 بجے سے شام 5 بجے تک منعقدہ اجلاسوں میں شریک ہوکر اپنی مادری زبان اردو سے محبت کا ثبوت دیں اور یونیورسٹی ایکشن کمیٹی کڑپہ کا تعاون کریں ۔ اردو یونیورسٹی ایکشن کمیٹی کڑپہ کے کنوینر و پندرہ روزہ علمی و ادبی اخبار وسیلہ کے مدیر جناب محمود شاہد نے کہا کہ کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کا قیام ایک تحریک ہے ۔ ضلع کے عہدیداروں پر اردو حکومت پر دباؤ ڈالنا ضروری ہے ۔ اردو یونیورسٹی کے قیام پر ایک طویل مدتی جدوجہد اور بھوک ہڑتال کرکے یونیورسٹی لاکر ہی رہیں گے ۔ اردو یونیورسٹی ایکشن کمیٹی کڑپہ کے سرپرست مولانا سید شاہ مصطفی حسین بخاری صدر ، انجمن ترقی اردو ضلعی شاخ کڑپہ اے پی نے کہا کہ ’’ اردو یونیورسٹی کے قیام پر ایک طویل مدتی بھوک ہڑتال ‘‘ تحریک کو مضبوط بنانے کیلئے مساجد کے ائمہ اور خطباء سے خصوصی گذارش ہے کہ مختلف نمازوں میں اعلانات کے ذریعہ اس طرف لوگوں کی توجہ دلائیں اور بالخصوص جمعہ کے روز بعد نماز جمعہ عظیم الشان ریالی کی صورت میں کلکٹریٹ کے احاطہ میں جمع ہوں ۔ معتمد عمومی انجمن ترقی اردو ضلعی شاخ کڑپہ جناب سید ہدایت اللہ نے کہا کہ اردو یونیورسٹی کے قیام کیلئے کڑپہ ایک اردو کا مرکز مانا جاتا ہے اردو کے چاہنے والوں کی کثیر تعداد ہے ۔ یہ علم کا ایک گہوارہ ہے ۔ STU کے مینارٹی لیڈر جناب الیاس نے بتایا کہ صحیح معنوں میں اردو یونیورسٹی کا قیام اور ترقی کڑپہ میں ہی ممکن ہے ۔V-NET کے چیرمین جناب سید افتخار جمال نے اپنی تقریر میں کہا کہ کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کا قیام ایک سنجیدہ عمل ہے ۔ کثیر اردو دان حضرات او سیاسی ،سماجی پارٹی کے قائدین سب ملکر اس احتجاج میں حصہ لیں ۔ اس اجلاس میں ستار فیضی ، یونس طیب AITA کے صدر عبدالرزاق ، اردو شعراء سردار ، ہادی ، افسر کڑپوی ، عارف منا ، جناب اشرف علی خان ، ڈاکٹر غوث پیر ، ارشد اقبال ، جاوید وغیرہ شامل رہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT