Saturday , September 22 2018
Home / کھیل کی خبریں / ’’کھلاڑیوں کا سلوک ناقابل قبول تھا‘‘ بی سی بی کا اعتراف

’’کھلاڑیوں کا سلوک ناقابل قبول تھا‘‘ بی سی بی کا اعتراف

سری لنکائی اور بنگلہ دیشی کھلاڑیوں میں جم کر تکرار ، کپتان شکیب الحسن اور نورالحسن پر جرمانہ

کولمبو۔ 18 مارچ (سیاست ڈاٹ کام )بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ (بی سی بی) نے تسلیم کیا ہے کہ ندھاس ٹرافی ٹوئنٹی 20ٹورنمنٹ کے جمعہ کو ہوئے میچ میں سری لنکا کی ٹیم کے خلاف بنگلہ دیشی کھلاڑیوں کے رویہ قابل اعتراض تھا۔کولمبو کے آر پریم داسا اسٹیڈیم میں ہو رہی ندھاس ٹرافی کے جمعہ کو ہوئے آخری ناک آؤٹ میچ کے دوران میزبان سری لنکا اور بنگلہ دیشی ٹیم کے کھلاڑیوں کے درمیان جم کر تکرار ہو گئی تھی ۔ بنگلہ دیشی ٹیم نے یہ میچ 2 وکٹ سے جیتا اور وہ فائنل میں پہنچ گئی۔لیکن اس دوران اس کے کھلاڑیوں نے میدان پر ناگن ڈانس کرنے سے لے کر مخالف ٹیم کے کھلاڑیوں کے ساتھ تیکھی بحث کرنے تک سب کچھ کیا جس کے لئے اس کے کھلاڑیوں نور الحسن اور کپتان شکیب الحسن پر جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے ۔بی سی بی نے مانا کہ اس کے کھلاڑیوں کا رویہ موزوں نہیں تھا اور اس نے آگے اپنے کھلاڑیوں کو کھیل جذبہ برقرار رکھنے کیلئے ہدایت بھی دی ہے ۔بی سی بی نے جاری اپنے بیان میں کہا کہ بورڈ سمجھتا ہے کہ بنگلہ دیش ٹیم کا کئی طریقوں میں کھیل کے میدان پر رویہ قابل قبول نہیں تھا۔یہ میچ دونوں ٹیموں کے لیے کافی اہم تھا ایسے میں بہت جوش میں یہ واقعہ ہوا کیونکہ کھلاڑی بہت دباؤ میں تھے ۔بورڈ لیکن سمجھتا ہے کہ کھلاڑیوں کو دباؤ کے حالت میں پیشہ ورانہ رویہ اپنانا چاہیے جو میدان پر اس میچ کے دوران نہیں دکھایا گیا۔بورڈ نے کہا کہ بنگلہ دیش ٹیم اراکین کو ان کی ذمہ داریوں کے لئے ہدایت کی گئی ہے اور کھیل جذبہ برقرار رکھنے کی ہدایت دی گئی ہے ۔واضح رہے کہ بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ نے اپنے کھلاڑیوں کے قصور کو قبول کرلیا ہے اور کپتان شکیب الحسن نے بھی کہا ہے کہ آگے وہ خود کو پرسکون رکھنے کی کوشش کریں گے، لیکن بین الاقوامی کرکٹ میں اس بات پر بحث شروع ہوگئی ہے کہ بنگلہ دیشی کھلاڑیوں اور جنوبی آفریقی کھلاڑی رباڈا کی سزا میں فرق کیوں ہے۔

TOPPOPULARRECENT