Wednesday , November 22 2017
Home / کھیل کی خبریں / کھلاڑیوں کے نامعقول مظاہرے پر کوچنگ چھوڑ دی تھی : جاوید

کھلاڑیوں کے نامعقول مظاہرے پر کوچنگ چھوڑ دی تھی : جاوید

کراچی ، 9 سپٹمبر (سیاست ڈاٹ کام)ایک حیران کن انکشاف میں پاکستان کے سابق کپتان جاوید میانداد نے دعویٰ کیا ہے کہ انھوں نے 1999 ء میں نیشنل کوچ کی حیثیت سے سبکدوش ہوجانے کا فیصلہ اس لئے کیا تھا اس لئے بعض کھلاڑی کھلے طورپر کرپشن اور غیراخلاقی سرگرمیوں میں ملوث ہورہے تھے ۔ میانداد نے کہا : ’’میں نے اُس وقت کے چیرمین کرکٹ بورڈ خالد محمود کو کارروائی کرنے کیلئے کہا تھا کیونکہ بصورت دیگر پاکستان کرکٹ کو آنے والے دنوں میں ناقابل تلافی نقصان ہونے کا اندیشہ تھا ۔ میرے ضمیر نے مجھے کوچ کی حیثیت سے برقرار رہنے کی اجازت نہیں دی ، لہذا میں 1999ء میں مستعفی ہوگیا تھا ‘‘۔ 124 ٹسٹ اور 233 ونڈے انٹرنیشنلس کھیلنے والے میانداد پی سی بی میں ڈائرکٹر ۔ جنرل کرکٹ کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے چکے ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ 1999ء میں بعض کھلاڑی قابل گرفت سرگرمیوں میں ملوث ہوچلے تھے۔ اُس دور میں فکسنگ کی لعنت پاکستان کرکٹ کی جڑوں کو کمزور کرنے لگی تھی ۔ میانداد کو انگلینڈ میں ورلڈ کپ سے چند ہفتہ قبل بحیثیت کوچ استعفیٰ دینے پر مجبور کیا گیا تھا جب ٹیم کے بعض ارکان نے اُن کے خلاف بغاوت کردی تھی ۔ کھلاڑیوں نے میانداد کی سرکردگی میں کھیلنے سے انکار کیا اور اسلام آباد میں ورلڈ کپ سے قبل ٹیم کیلئے منعقدہ استقبالیہ کے دوران دعویٰ کیا گیا تھا کہ انھوں نے شارجہ میں قبل ازیں منعقدہ ایک ٹورنمنٹ کے دوران میچز فکس کئے جانے سے متعلق کھلاڑیوں کے خلاف بے بنیاد الزامات عائد تھے ۔ دو سینئر کھلاڑیوں نے مبینہ طورپر میانداد کو ڈریسنگ روم میں جھگڑے کے دوران بیاٹوں سے دھمکایا تھا ، جہاں آخرالذکر نے انگلینڈ کے خلاف میچ میں پاکستانی کھلاڑیوں پر دانستہ ناقص مظاہرے کا الزام عائد کیا تھا ۔ میانداد نے اخبار جنگ کو انٹرویو میں یہ بھی بتایا کہ ’’جو کچھ انھوں نے کہا ہے کہ سچ ہے ۔ حقیقت ہے کہ میں نے خالد محمود کو متنبہ کیا تھا کہ بعض کھلاڑی دانستہ ناقص کارکردگی دکھارہے ہیں ۔ میں نے انھیں ضروری کارروائی پر زور دیا تھا لیکن انھوں نے میری بات پر یقین نہیں کیا اور آج ہم دیکھ رہے ہیں کہ پاکستان کرکٹ کو کس قدر نقصان ہوا ہے ‘‘۔

TOPPOPULARRECENT