Wednesday , January 24 2018
Home / شہر کی خبریں / کھنڈر نما عمارات میں اولڈ سٹی آئی ٹی آئی ہاسٹل بھوت بنگلے میں تبدیل

کھنڈر نما عمارات میں اولڈ سٹی آئی ٹی آئی ہاسٹل بھوت بنگلے میں تبدیل

حیدرآباد ۔ 26 ۔ دسمبر : ( نمائندہ خصوصی) : پرانا شہر حیدرآباد کا ماضی جس قدر تابناک و شاندار تاریخی اہمیت کا حامل رہا ہے ۔ اس کا موجودہ دور اتنا ہی تاریک اور درد ناک نظر آتا ہے ۔ حیدرآباد کا قدیم علاقہ جس کو ہم پرانا شہر کہتے ہیں ہمیشہ ہی نظر انداز کیا جاتا رہا ہے جس کے باعث اس علاقے کی صورت حال احساس محرومی کے شکار کی زندہ مثال نظر آتی ہے حالانکہ پرانا شہر کے بغیر شہر حیدرآباد کی کوئی خاص اہمیت اور انفرادیت باقی نہیں رہ جاتی ۔ یہاں پر قائم تمام سرکاری ادارے انتہائی خستہ حالی کا شکار ہے ۔ اس کی ایک مثال آئی ٹی آئی اولڈ سٹی ہے جس کی عمارتیں کھنڈرات میں تبدیل ہوتی جارہی ہیں ۔ اس کے ہاسٹلس کو دیکھنے کے بعد بھوت بنگلے کا احساس ہوتا ہے ۔ حالانکہ مسابقت کے اس دور میں طلباء و طالبات میں تکنیکی صلاحیتوں کو فروغ دینے کے لیے انڈسٹریل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ یعنی ITI کا قیام عمل میں آیا تھا ۔ پرانے شہر کے علاقہ تاڑبن میں آئی ٹی آئی کا قیام 1972 میں عمل میں آیا تھا ۔ تاہم اس کا افتتاح 24 جنوری 1978 کو اس وقت کے چیف منسٹر جی وینگل راؤ نے کیا تھا ۔ اور وزیر لیبر ٹی انجیا اس موقع پر موجود تھے۔ مگر حکومت کی عدم دلچسپی اور پرانے شہر سے روایتی امتیازی سلوک کی وجہ سے آج یہ آئی ٹی آئی کھنڈر نما عمارت میں تبدیل ہوتا جارہا ہے ۔ جب کہ اس آئی ٹی آئی کا ہاسٹل کسی بھوت بنگلے کا منظر پیش کررہا ہے ۔ دراصل گذشتہ کی حکومتیں خواہ ٹی ڈی پی کی حکومت رہی ہو یا کانگریس کی ، سب نے اس قدیم آئی ٹی آئی کو نظر انداز کردیا ہے ۔ مقامی عوام کا احساس ہے صرف پرانے شہر میں ہونے کی وجہ سے اس کی طرف پلٹ کر نہیں دیکھا جاتا ۔ یہ کس قدر المیہ ہے کہ آج سے 42 سال سے پہلے اس عمارت کا رنگ و روغن کیا گیا تھا جس کے بعد کبھی پلٹ کر نہیں دیکھا گیا ۔ مقامی ذرائع کے مطابق جو بھی آفیسر آتا ہے وہ صرف اپنا چیمبر ٹھیک کرالیتا ہے مگر مجموعی طور پر عمارت کی طرف توجہ نہیں دی جاتی ۔۔

TOPPOPULARRECENT