Sunday , November 19 2017
Home / دنیا / کہر کی وجہ سے بیجنگ میں ریڈ الرٹ تعلیمی ادارے بند کردینے کی ہدایت

کہر کی وجہ سے بیجنگ میں ریڈ الرٹ تعلیمی ادارے بند کردینے کی ہدایت

بیجنگ ۔ 7 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) چین کے دارالحکومت بیجنگ نے آج پہلا ریڈالرٹ جاری کردیا کیونکہ شہر کے دو کروڑ 20 لاکھ عوام کو اب تک کی بدترین کہر کا سامنا ہے۔ عہدیدار اسکولس اور تعلیمی ادارے بند کرنے اور کارخانوں و ٹریفک پر تحدیدات عائد کرنے پر مجبور ہوگئے۔ بیجنگ میں فضائی آلودگی کی وجہ سے چوکسی کی سطح میں اضافہ کرکے اسے نارنجی سے سرخ کردینے پر مجبور ہوگیا۔ یہ پہلی بار ہے جبکہ دارالحکومت نے ریڈالرٹ نافذ کیا گیا ہے جو منگل کی صبح 7 بجے سے جمعرات 12 بجے دن تک جاری رہے گا۔ سرکاری خبر رساں ادارہ ژنہوا کے بموجب یہ انتہائی سنگین سطح ہے۔ شہر کے ہنگامی انتظامیہ ہیڈکوارٹرس کے بموجب ریڈ الرٹ کے دوران انڈرگارٹن، پرائمری اور ہائی اسکولس کو مشورہ دیا گیا ہیکہ وہ اپنی کلاسیس معطل کردیں۔ بیرون مکان تعمیراتی مقاموں پر کارروائیوں پر امتناع عائد کردیا گیا ہے۔ بعض کارخانوں کو پیداوار محدود یا بند کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ گذشتہ ہفتہ کئی دن تک کہر چھائے رہنے کے بعد پولیس نے دو کروڑ 25 لاکھ آبادی کے شہر میں ٹریفک تحدیدات بھی عائد کردیئے ہیں۔ کاروں کے استعمال کو محدود کردیا گیا ہے۔ 30 فیصد سرکاری کاریں سڑکوں پر نظر آنے پر امتناع عائد کیا گیا ہے۔ سرکاری ٹی وی کی خبر کے بموجب بیجنگ کے عہدیداروں نے پہلی بار ٹریفک میں کمی کے مقصد سے گنجان آبادی ٹیکس عائد کرنے پر غور کرنا شروع کیا ہے۔ فی الحال فضائی آلودگی کا 30 فیصد سے زیادہ حصہ گاڑیوں سے خارج ہونے والے دھویں کا نتیجہ ہے۔ بلدی ماحولیاتی نگرانکار مرکز بیجنگ کے بموجب زبردست فضائی آلودگی جمعرات تک جاری رہے گی۔ جمعرات کی دوپہر کے بعد اس کے ختم ہوجانے کا امکان ہے۔ ہوا کے معیار کے بارے میں بیجنگ میں موجود امریکی سفارتخانہ کی جانب سے انتباہ جاری کیا گیا تھا اور ہوا میں 2.5 پی ایم ٹی ذرات کی موجودگی کو انتہائی ’’مضرصحت‘‘ قرار دیا گیا تھا اور کہا گیا تھا کہ حد بصارت میں کمی کی وجہ سے کئی بیماریاں پیدا ہوسکتی ہیں جن میں امراض قلب اور پھیپھڑوں کے امراض بھی شامل ہیں۔ عام آبادی کو سانس لینے میں دشواری پیش آسکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT