Thursday , November 23 2017
Home / بچوں کا صفحہ / کیا بات ہے !

کیا بات ہے !

٭ ایک آدمی دوسرے سے ’’ تم دن میں کتنی مرتبہ شیو کرتے ہو ؟ ‘‘ دوسرا آدمی ’’ میں دن میں چالیس مرتبہ شیو کرتا ہوں ۔ ‘‘ ۔ پہلا آدمی ’’ کیا تم پاگل ہو ؟ ‘‘ دوسرا آدمی ’’ نہیں میں حجام ہوں ۔ ‘‘ ۔
٭ ڈاکٹر ( مریض سے ) ’’ معلوم ہوتا ہے کہ میرے مشورے سے آپ کو بہت فائدہ ہورہا ہے ۔ ‘‘ مریض ’’ اتنا نہیں جتنا آپ کو مجھ سے فائدہ حاصل ہورہا ہے ۔ ‘‘
٭ استاد ’’ اسلم تم آج دیر سے کیوں آئے ہو ؟ ’’ اسلم ’’ جناب میں خواب میں لندن جارہا تھا ۔ ‘‘ استاد ’’ اکرم تم کیوں دیرے سے آئے ہو ؟ ‘‘ اکرم ’’ جناب میں اسلم کو ایرپورٹ چھوڑنے گیا تھا ۔ ‘‘
٭ باپ بیٹے سے ’’ جمعہ کا دن ہے نہالو ‘‘ بیٹا ’ مجھے سردی لگ رہی ہے ۔ ‘‘ باپ ’’ تو کوٹ پہن کر نہالو ‘‘۔
٭ فقیر ( راہ گیر سے ) ’’ خدا کی راہ میں دس روپئے دیتے جاو ‘‘  راہ گیر ’’ دس روپئے تو ن ہیں دوں گا ۔ اگر بھوک لگی ہے تو کھانا کھلا سکتا ہوں ۔ فقیر ’’ ارے جی معاف کرو اپنے کھانے سے ! صبح سے دس روپئے کے چکر میں دس بار کھانا کھاچکا ہوں ۔
٭ بیٹا ’’ ابو میں کس چیز سے بنا ہوں ؟ ‘‘ ابو ’’ مٹی سے ۔ ‘‘ بیٹا پھر مجھے زیادہ نہ مارا کریں ورنہ کسی دن ٹوٹ جاوں گا ۔ ‘‘

TOPPOPULARRECENT