Wednesday , October 17 2018
Home / شہر کی خبریں / کیا چندرابابو لائی ڈیٹکٹر ٹسٹ سے گذرنے تیار ہیں ؟

کیا چندرابابو لائی ڈیٹکٹر ٹسٹ سے گذرنے تیار ہیں ؟

آڈیو ٹیپ کی اجرائی سے حکومت تلنگانہ کا کوئی تعلق نہیں : کے ٹی آر

آڈیو ٹیپ کی اجرائی سے حکومت تلنگانہ کا کوئی تعلق نہیں : کے ٹی آر
حیدرآباد ۔ 8۔ جون (سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے وضاحت کی کہ نوٹ برائے ووٹ اسکام کے سلسلہ میں چندرابابونائیڈو کے آڈیو ٹیپ کی اجرائی سے تلنگانہ حکومت کا کوئی تعلق نہیں ہے۔ اس مسئلہ پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ اس مسئلہ پر آندھراپردیش اور تلنگانہ ریاستوں میں جو صورتحال ہے، وہ ہر کسی پر عیاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ قانون ساز کونسل کے انتخابات میں ایک نشست پر کامیابی حاصل کرنے کیلئے چندرا بابو نائیڈو اور تلگو دیشم قائدین نے ہر ممکن کوشش کی اور غیر جمہوری طریقے اختیار کرتے ہوئے ٹی آر ایس کے ارکان کو دولت کا لالچ دے کر خریدنے کی کوشش کی۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں تلگو دیشم کے رکن اسمبلی ریونت ریڈی کو اینٹی کرپشن بیورو نے رنگے ہاتھوں گرفتار کیا ہے۔ بھاری رقم کے ساتھ رکن اسمبلی کو گرفتار کیا گیا اور اس سلسلہ میں تحقیقات جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحقیقات کے بارے میں وہ کوئی تبصرہ کرنا نہیں چاہتے کیونکہ تحقیقات کی تکمیل کے بعد حقائق منظر عام پر آئیں گے۔ کے ٹی آر نے اس مسئلہ پر دونوں ریاستوں کے درمیان تنازعہ کو غیر ضروری قرار دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ مسئلہ دونوں ریاستوں کے درمیان تنازعہ کا سبب نہیں بننا چاہئے ۔ کے ٹی آر نے کہا کہ میڈیا کے بعض گوشوں میں ان سے متعلق بعض آڈیو ٹیپ کے منظر عام پر آنے کی اطلاعات شائع ہوئی ہیں۔ انہوں نے چندرا بابو نائیڈو کو چیلنج کیا کہ کیا وہ الزامات کے سلسلہ میں لائی ڈیٹکٹر ٹسٹ سے گزرنے کیلئے تیار ہیں؟ انہوں نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو نے رکن اسمبلی کو لالچ دینے کیلئے اپنی پارٹی کے رکن اسمبلی کو روانہ کیا تھا جو بے نقاب ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے سی آر کی امیج کو متاثر کرنے کیلئے بعض گوشوں کی جانب سے ان پر الزامات عائد کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ کسی بھی الزام کی تحقیقات کیلئے تیار ہیں۔کے ٹی آر نے اس اسکام کے بارے میں چندرا بابونائیڈو کی خاموشی پر بھی حیرت کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس اسکام پر ابھی تک چیف منسٹر آندھراپردیش نے کسی بھی تبصرہ سے گریز کیا ہے۔ چندرا بابو نائیڈو کو چاہئے کہ وہ اس بارے میں اپنے موقف کی وضاحت کریں۔ کے ٹی آر نے چندرا بابونائیڈو کے ان الزامات کو مسترد کردیا کہ تلنگانہ حکومت ان کے ٹیلیفون ٹیاپ کر رہی ہے۔ نائیڈو نے کل گورنر ای ایس ایل نرسمہن سے ملاقات کرتے ہوئے اس سلسلہ میں شکایت کی تھی۔

TOPPOPULARRECENT