Friday , September 21 2018
Home / سیاسیات / کیا ہیمامالینی کی فلم ’’دھرماتما‘‘ محبت کو فروغ نہیں دیتی

کیا ہیمامالینی کی فلم ’’دھرماتما‘‘ محبت کو فروغ نہیں دیتی

لکھنو۔24اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) چیف منسٹر اترپردیش اکھلیش یادو نے آج بی جے پی پر نکتہ چینی کی۔ مسلم لڑکوں کے ہندو لڑکیوں کے ساتھ ہونے والے معاشقہ ’’لوجہاد‘‘ کے مسئلہ کے خلاف بی جے پی کی مہم پر انہوں نے استفسار کیا کہ آیا بی جے پی کی رکن پارلیمنٹ ہیمامالینی نے فلموں میں محبت کے سین کر کے اس طرح کی دوستی اور تعلقات کو فروغ نہیں دیا ہے ۔ ک

لکھنو۔24اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) چیف منسٹر اترپردیش اکھلیش یادو نے آج بی جے پی پر نکتہ چینی کی۔ مسلم لڑکوں کے ہندو لڑکیوں کے ساتھ ہونے والے معاشقہ ’’لوجہاد‘‘ کے مسئلہ کے خلاف بی جے پی کی مہم پر انہوں نے استفسار کیا کہ آیا بی جے پی کی رکن پارلیمنٹ ہیمامالینی نے فلموں میں محبت کے سین کر کے اس طرح کی دوستی اور تعلقات کو فروغ نہیں دیا ہے ۔ کیا تم نے بی جے پی ایم پی کی فلم ’’ دھرماتما‘‘ کا گیت نہیں سنا ہے ‘کیا یہ گیت پیار و محبت کو فروغ نہیں دیتا ۔ اکھلیش یادو نے اترپردیش میں پارٹی عاملہ اجلاس میں بی جے پی کی جانب سے ’’لوجہاد‘‘ کے مسئلہ کو اٹھانے پر اخباری نمائندوں کے پوچھے گئے سوالات کا جواب دیا ۔ چیف منسٹر بظاہر اداکارہ سے سیاستداں بننے والی اور متھرا کی رکن پارلیمنٹ ہیمامالینی کی 1975ء کی فلم ’’دھرماتما‘‘کا ذکر کیا جس میں فیروز خان ہیرو تھے ۔ ’’لوجہاد‘‘ کی اصطلاح بعض ہندو گروپس نے بنائی ہے جو مبینہ طور پر غیر مسلم لڑکیوں نے عشق میں مبتلا ہوتے ہوئے اسلام قبول کیا ہے ۔ یو پی کے بی جے پی سربراہ لکشمی کانت باجپائی نے کل کہا تھا کہ اکثریتی طبقہ کی لڑکیاں اقلیتی طبقہ کے نوجوانوں سے محبت کر کے اسلام قبول کررہی ہیں ۔ اس عمل کو روکنے کے لئے شدید مہم کی ضرورت ہے تاکہ لوجہاد کے خلاف ہندوؤں کو چوکس کیا جاسکے ۔

بی جے پی کے ایجنڈہ سے ’’لوجہاد‘‘ خارج
تنازعہ سے گریز کرنے سیاسی قرارداد میں لوجہاد کا ذکر نہیں
متھرا ۔24اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی کے دو روزہ ریاستی عاملہ اجلاس کے اختتام پر جاری کردہ سیاسی قرارداد میں ’’لوجہاد‘‘ کو خارج کردیا گیا ہے ۔ اس سے اشارہ ملتاہے کہ بی جے پی متنازعہ مسئلہ سے گریز کرنا چاہتی ہے ‘ تاہم پارٹی نے یہ واضح کردیا ہے کہ ایک طبقہ کے خواتین کے خلاف حملے کرنا تشویش کی بات ہے ۔ عصمت ریزی کے واقعات میں 50فیصد کا اضافہ ہوا ہے اور جو لوگ خاطی ہیں وہ مزید اپنی طاقت کا مظاہرہ کررہے ہیں لیکن اکھلیش حکومت مذہب اور ذات پات کی بنیادوں پر امتیاز برت رہے ہیں ۔ بی جے پی کی سیاسی قرارداد میں مسلم نوجوانوں کی ہندو لڑکیوں سے محبت اور شادی کا ذکر نہیں کیا گیا ‘ صرف یو پی کے اندر لا اینڈ آرڈر کی ناکامی اور برقی بحران کا ذکر ہے ۔

TOPPOPULARRECENT