Tuesday , December 12 2017
Home / سیاسیات / کیرالا میں بی جے پی دفتر پر چھاپہ ، ہتھیار برآمد

کیرالا میں بی جے پی دفتر پر چھاپہ ، ہتھیار برآمد

کنور۔11 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) کیرالا میں سی پی ایم پر سیاسی تشدد اور سنگھ پریوار کے کارکنوں کے قتل کا الزام لگاکر پورے ملک میں خودکو مظلوم ظاہر کرنے والی بی جے پی کی کیرالا اکالی کی قلعی اس وقت کھل گئی جب پولیس نے کنور میں اس کے ایک دفتر پر چھاپہ مارا۔ یہ چھاپہ حال ہی میں سی پی ایم کی ایک ریلی پر بم پھینکے جانے کی واردات کے بعد تفتیش کے دوران ماراگیا۔ چھاپے کے بعد سب کی آنکھیں اس وقت کھلی کی کھلی رہ گئیں جب زعفرانی پارٹی کے دفتر سے مہلک ہتھیار برآمد ہوئے۔ اس سے قبل پیر کو نئی دہلی میں بی جے پی کے صدر دفتر کی جانب مارچ کرتے ہوئے سی پی ایم نے زعفرانی پارٹی سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ سیاسی تشدد سے باز آجائے ورنہ بایاں محاذ منہ توڑ جواب دینے کی طاقت رکھتا ہے۔ واضح رہے کہ کیرالا میں سیاسی قتل معمول بنتے جارہے ہیں۔ یہاں بی جے پی اور سی پی ایم ایک دوسرے پر الزام عائد کرتے رہتے ہیں۔ سی پی ایم کی ایک ریلی پر بم پھینکے جانے کے بعد پیر کو کنور کے پنا علاقے میں مقامی پولیس نے بی جے پی کے دفتر پر جب چھاپہ مارا تو وہاں اسے ایک تلوار اور تین اسٹیل بم اور دیگر ہتھیار ملے۔

TOPPOPULARRECENT