Thursday , November 23 2017
Home / سیاسیات / کیرالا میں سیاسی تشدد پر مرکز کا اظہار تشویش

کیرالا میں سیاسی تشدد پر مرکز کا اظہار تشویش

وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کا چیف منسٹر پی وجین سے ٹیلی فون پر رابطہ
نئی دہلی؍ تھروننتھا پورم۔ /8ستمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے آج چیف منسٹر کیرالا پینارائی وجین کو ریاست میں حالیہ پرتشدد واقعات پر مرکز کی تشویش سے واقف کروایا۔ جہاں پر منگل کی شب بی جے پی آفس پر بم حملہ کیا گیا تھا اور ان سے کہا گیا ہے کہ حملہ آوروں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ ٹیلی فون مذاکرات کے دوران راجناتھ سنگھ نے سیاسی تشدد کے واقعات پر وجین سے تبادلہ خیال کیا۔ چیف منسٹر نے وزیر داخلہ کو یہ تیقن دیا کہ موثر اقدامات کئے جائیں گے۔ دہلی میں سرکاری ذرائع نے یہ اطلاع دی جبکہ تھرواننتھا پورم میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے بی جے پی کے ریاستی صدر کے راج شیکھرن نے یہ ادعا کیا کہ راجناتھ سنگھ نے چیف منسٹر کو خبردار کیا کہ مرکز خاموش تماشہ نہیں دیکھے گا اگر ریاستی حکومت حملوں کی روک تھام کیلئے اقدامات نہیں کرے گی۔ یہ مبینہ حملے سی پی ایم لیڈر کی جانب سے بی جے پی کارکنوں پر کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وزیر موصوف نے کیرالا کی صورتحال پر مرکزی معتمد داخلہ سے ایک رپورٹ طلب کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ بی جے پی ارکان پارلیمنٹ کا ایک وفد بہت جلد کیرالا کا دورہ کرکے پارٹی قیادت کو ایک رپورٹ پیش کرے گا اور پارٹی قیادت نے کیرالہ میں تشدد کے مسئلہ کو سنجیدگی سے لیا ہے موثر اقدامات کیلئے پہل شروع کردی گئی ہے۔ واضح رہے کہ تھرواننتھا پورم میں منگل کی شب بی جے پی آفس پر ایک خام بم پھینکا گیا تھا جس پر پارٹی نے الزام عائد کیا تھا کہ یہ سی پی ایم کارکنوں کی کارستانی ہے یہ بم حملہ نصف شب کو اسوقت کیا گیا جب ریاستی صدر راج شیکھرن، آفس سے کوزی کوڈ کیلئے روانہ ہوگئے۔ اس شہر میں 23ستمبر سے  بی جے پی کی قومی عاملہ اور کونسل کے تین روزہ اجلاس کی تیاریاں جاری ہیں۔ اجلاس میں سینئر پارٹی قائدین اور وزیر اعظم نریندر مودی شریک ہوں گے۔ اگرچیکہ بم حملہ میں کوئی زخمی نہیں ہوا لیکن باب الداخلہ کے دروازوں کے گلاسیس کو نقصان پہنچا ہے۔ مسٹر راج شیکھرن نے بتایا کہ پارٹی صدر امیت شاہ کو نازک صورتحال سے آگاہ کردیا گیا اور یہ الزام عائد کیا کہ ریاست میں بی جے پی کو آزادانہ سیاسی سرگرمیاں چلانے کی اجازت بھی نہیں ہے کیونکہ سی پی ایم برسر اقتدار اوروجین کے پاس وزارت داخلہ کا قلمدان رہنے کی وجہ سے اپوزیشن کو کچلنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ دریں اثناء ضلع کنور میں کل رات سی پی ایم ورکرس نے بی جے پی کے ایک حامی پر حملہ کردیاجہاں سے پولیس نے 2 بم ضبط کرلئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT