Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / کیرالا کے باوقار کالج کے طلباء کا انوکھااحتجاج

کیرالا کے باوقار کالج کے طلباء کا انوکھااحتجاج

پرنسپال کے وظیفہ پر سبکدوشی کے دن علامتی قبر کی تعمیر
پالکھڈ( کیرالا )۔ /5اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) بظاہر اپنے پرنسپال کی تضحیک کرنے کیلئے 127 سالہ قدیم و باوقار گورنمنٹ وکٹوریہ کالج کے طلباء جن کا تعلق بائیں بازو کی طلباء تنظیم ایس ایف آئی سے ہے ریٹائرمنٹ گفٹ ( تحفہ سبکدوشی ) کے طور پر ان کی علامتی قبر تیار کی۔ پرنسپال ڈاکٹر ٹی این سرسو کی شکایت پر پولیس نے مخالف دفاعت کے تحت ایس ایف آئی طلباء کے خلاف کیس درج کرلیا۔ جبکہ یہ پرنسپال31مارچ کو وظیفہ حسن خدمات پر سبکدوش ہوگئیں۔ ڈاکٹر سرسو نے الزام عائد کیا کہ ان طلباء نے آل کیرالاگورنمنٹ کالج ٹیچرس یونین کے بعض ارکان کی ایماء پر یہ حرکت کی ہے جبکہ یہ یونین بھی بائیں بازو کی حامی ہے۔ انہوں نے پولیس میں درج اپنی شکایت میں ایس ایف آئی کے 8کارکنوں کے نام لئے ہیں جنہوں نے کالج کیمپس میں علامتی قبر تیار کی ہے اور پھول مالا چڑھائے۔ یہ واقعہ 31مارچ کی صبح 7بجے پیش آیا تھا۔ اس واقعہ کے چشم دید دیگر طلباء نے پرنسپال کو اطلاع دی تھی۔ انہوں نے کہا کہ بحیثیت پرنسپال میں نے طلباء کے بیجا مطالبات کو قبول نہیں کیا جس کے باعث وہ برہم ہوگئے تھے۔ ڈاکٹر سرسو نے کہا کہ انہوں نے بحیثیت زوالوجی پروفیسر 27سال تک خدمات انجام دی ہیں اور پرنسپال کی حیثیت سے مکمل دیانتداری اور سنجیدگی سے کام کیا ہے۔ واضح رہے کہ سابق چیف الیکشن کمشنر ٹی این سیشن، میٹرو مین ای سریدھرن، سابق چیف منسٹر کیرالا ای ایم ایس نمبودری پد اور ادیب و کارٹونسٹ اووی وجین مذکورہ کالج کے طالب علم رہ چکے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT