Saturday , November 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / کیریئر ختم نہیں ہوا، تین چار سال کھیل سکتا ہوں:عمر گل

کیریئر ختم نہیں ہوا، تین چار سال کھیل سکتا ہوں:عمر گل

کراچی ۔12 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) پاکستانی فاسٹ بولر عمر گل نے دعویٰ کیا کہ وہ مزید تین چار سال کرکٹ کھیل سکتے ہیں اور وقت آنے پر یہ بات ثابت کر دیں گے۔ فاسٹ بولر عمر گل نے کیریئر ختم ہونے کی قیاس آرائیوں کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اپنی فٹنس پر کام کر رہے ہیں اور جلد  ٹیم کا حصہ ہوں گے۔ زخموں اور ناقص فارم کے سبب ایک عرصے سے ٹیم سے باہر رہنے والے عمر گل نے اپنے خصوصی انٹرویو میں کہا کہ جب میں 2004 میں زخموں کا شکار ہوا تھا تو اس وقت بھی لوگوں نے کہا تھا کہ میرا کیریئر ختم ہو چکا ہے لیکن میں نے بہترین انداز میں واپسی کی۔ انہوں نے کہا کہ لوگ کیا کہتے ہیں میں اس پر یقین نہیں رکھتا، میں اپنی فٹنس پر کام کر رہا ہوں، اپنے آپ پر یقین ہے اور بہت جلد ٹیم میں واپس آؤں گا۔گل نے کہا کہ میں مکمل فٹ اور بہت اچھا محسوس کر رہا ہوں، حال ہی میں ڈومیسٹک کرکٹ اور پاکستان سوپر لیگ میں شرکت کی ہے جبکہ ایک ہفتہ قبل پشاور میں کلب کرکٹ میں بھی حصہ لیا تھا۔ یاد رہے کہ ٹوئنٹی20 کرکٹ کے کامیاب ترین بولروں میں سے ایک تصور کئے جانے والے عمر گل کا کیریئر زخموں سے متاثر رہا ہے اور خصوصاً گزشتہ تین چار سال کے دوران وہ مسلسل زخموں کا شکار رہے جبکہ اپنی ناقص فارم کی وجہ سے ٹیم میں مستقل جگہ بنانے میں بھی ناکام رہے اور یہی وجہ تھی کہ وہ ورلڈ کپ 2015 اور رواں سال ہونے والے ٹوئنٹی20 ورلڈ کپ کے لئے بھی پاکستانی اسکواڈ میں جگہ بھی نہیں بنا سکے تھے۔ اپنی ناقص فارم اور ٹیم میں جگہ نہ بنانے کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے عمر گل نے کہا کہ میں سات آٹھ ماہ بعد واپسی کر رہا تھا اور مجھے کافی حیرانی ہوئی کہ سلیکشن کمیٹی نے محض ایک میچ بعد ہی مجھے ٹیم سے باہر کر دیا۔ عمر گل نے اپریل 2015 میں بنگلہ دیش کے خلاف میچ کے بعد جنوری میں دورہ نیوزی لینڈ میں سیریز کے لئے ٹیم کا حصہ بنے لیکن دو میچوں میں غیر معیاری کارکردگی کے بعد ان کو باہر بٹھا دیا گیا۔ فاسٹ بولر کو فارم میں آنے کے لئے ردھم کی ضرورت ہوتی ہے، آپ کسی سے کیسے توقع رکھ سکتے ہیں کہ وہ زخموں کے بعد واپس آتے ہی دس وکٹیں لے یا کارکردگی دکھانے لگے، مجھے حیرت ہوتی ہے کہ یہ کس طرح کا معیار ہے۔ انہیں صحیح طریقے سے موقع دینا چاہیے، صرف ایک میچ کے بعد فیصلہ نہیں کیا جا سکتا۔ کم از کم ایک سیریز میں موقع دیں اور پھر فیصلہ کریں۔ کسی کو بھی خارج کرنے سے پہلے بھرپور موقع دینا چاہئے۔ رواں ہفتہ اپنی 32ویں سالگرہ منانے والے عمر گل نے کہا کہ مزید تین سے چار سال کرکٹ کھیل سکتے ہیں اور وقت آنے پر یہ بات ثابت کردیں گے۔

TOPPOPULARRECENT