Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / کیسرا منڈل میں عاشور خانہ کے انہدام کے خلاف وقف بورڈ پر احتجاج

کیسرا منڈل میں عاشور خانہ کے انہدام کے خلاف وقف بورڈ پر احتجاج

بورڈ کی لاپرواہی پر تنقید ، مولانا سید نثار حسین حیدر آغا کی چیرمین بورڈ سے نمائندگی
حیدرآباد۔20 جولائی (سیاست نیوز) وقف بورڈ کے دفتر واقع حج ہائوز میں آج شیعہ تنظیموں کی جانب سے احتجاج منظم کیا گیا جس میں میڑچل ضلع کے کیسرا منڈل میں ریوینیو و بلدی حکام کی جانب سے قدیم عاشور خانہ منہدم کرنے کی مذمت کی گئی۔ رکن وقف بورڈ مولانا سید نثار حسین حیدر آغا کی قیادت میں مختلف شیعہ تنظیموں کے نمائندوں نے صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم اور چیف ایگزیکٹیو آفیسر منان فاروقی سے نمائندگی کی اور وقف بورڈ کی بے حسی اور خاموشی کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ صدرنشین وقف بورڈ نے تیقن دیا کہ بورڈ کی جانب سے دوبارہ عاشور خانہ تعمیر کیا جائے گا اور منہدم کرنے کے ذمہ دار افراد کے خلاف پولیس میں شکایت کی جائے گی۔ مولانا نثار حسین حیدر آغا نے بتایا کہ عاشور خانہ شہزادہ امام قاسم گزٹ کے تحت اوقافی ادارہ ہے اور ایم آر او نے متعلقہ افراد کو کوئی نوٹس دیئے بغیر ہی منہدم کردیا اس کے بعد علم اور دیگر متبرک سامان کی توہین کی گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ مقامی غیر سماجی عناصر کی ملی بھگت کے ذریعہ یہ کارروائی کی گئی اور وقف بورڈ خاموش تماشائی بنا رہا۔ وفد نے بتایا کہ عاشور خانے کے تحفظ کے سلسلہ میں وقف بورڈ سے نمائندگی کی جاچکی ہے لیکن ایسا محسوس ہوتا ہے کہ بورڈ کا اندرونی عملہ غیر مجاز قابضین اور غیر سماجی عناصر سے ملی بھگت رکھتا ہے۔ ان کی لاپرواہی کے سبب 19 جولائی کو ایم آر او نے دن دہاڑے عاشور خانے کو منہدم کردیا۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ نے جو متولی مقرر کیا تھا ان کے انتقال کے بعد فرزند اپنے خود ساختہ متولی کی طرف غیر قانونی طور پر اوقافی اراضیات فروخت کررہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ عاشور خانے سے متصل اوقافی اراضی بھی غیر قانونی طور پر فروخت کی جارہی ہے۔ مولانا نثار حسین حیدر آغا نے شیعہ تنظیموں کے نمائندوں کے ساتھ منہدم عاشور خانہ کا معائنہ کیا اور حکام کے رویہ پر سخت تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی اراضی کے بارے میں جانتے ہوئے بھی یہ کارروائی کی گئی۔ انہوں نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے سلسلہ میں وقف بورڈ کو متحرک ہونے کا مشورہ دیا اور کہا کہ اگر اس طرح کی کارروائیوں پر خاموشی اختیار کی جائے تو مساجد کو بھی نشانہ بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ سڑکوں کی توسیع کے نام پر صرف مسلمانوں کی مذہبی نشانیوں کو نقصان پہنچایا جارہا ہے۔ انہوں نے صدرنشین وقف بورڈ سے کیسرا منڈل کا دورہ کرنے کی اپیل کی ہے۔ نمائندگی کرنے والوں میں سید سجاد حیدر، علمدار، علی نواب،شاہد آغا، نواز آغا، کرار احمد، رضا علی، حیدر آغا، حسن علی، شبیر آغا، نصیر باقر نواب شامل ہیں۔

 

TOPPOPULARRECENT