Sunday , December 17 2017
Home / ہندوستان / کینٹین میں ہندوؤں کو بڑے کا گوشت سربراہ کرنے والے پر فائرنگ

کینٹین میں ہندوؤں کو بڑے کا گوشت سربراہ کرنے والے پر فائرنگ

ڈھاکہ ۔ 20 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش کی باوقار ڈھاکہ یونیورسٹی میں کرائے پر کینٹین چلانے والے پر ہندو طلباء کو بڑے کا گوشت سربراہ کرنے پر گولی کا نشانہ بنایا گیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق ہندوؤں کے مذہبی جذبات مجروح کرنے پر کینٹین چلانے والے پر فائرنگ کی گئی۔ اس سلسلہ میں یونیورسٹی نے تحقیقات کیلئے کمیٹی تشکیل دی ہے جہاں اندرون ایک ہفتہ رپورٹ داخل کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ ذاکر حسین جو دراصل درجہ چہارم کا ملازم تھا لیکن بعدازاں وہ فیکلٹی آف فائن آرٹس کینٹین کو کرائے پر چلانے لگا۔ بنگلہ نئے سال ’’پہلا بیساکھ‘‘ کے موقع پر سینکڑوں طلباء جمع ہوئے تھے۔ فیکلٹی کے طلباء نے کہا کہ کینٹین میں بڑے کا گوشت پکانے کی کبھی حوصلہ افزائی نہیں کی گئی کیونکہ ہندو طلباء کے مذہبی جذبات کی ہمیں پاسداری کرنی تھی۔ ذاکر حسین کینٹین حکام کی اجازت کے بغیر چلا رہا تھا۔ طلباء نے کھانے کے لئے طاہری کا مطالبہ کیاتھا جو ذاکر حسین نے بڑے کے گوشت سے تیار کردی۔ تاہم یہ بھی کہا جارہا ہیکہ بعض طلباء نے شرارتاً بڑے کے گوشت سے طاہری تیار کرنے کا حکم دیا تھا اور اپنے ہندو دوستوں کو کھلائی۔ اس واقعہ کی مزید تحقیقات کی جارہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT