Wednesday , January 24 2018
Home / Top Stories / کے ایف سی ، بیکانیر والا ، ساگر رتن اور دیگر مقبول غذائیں غیر معیاری : ہائی کورٹ

کے ایف سی ، بیکانیر والا ، ساگر رتن اور دیگر مقبول غذائیں غیر معیاری : ہائی کورٹ

نئی دہلی ۔ 6 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام) : ہوٹل یا تیار غذاؤں کو کھانے کے دلدادہ افراد کے لیے یہ خبر ایک بہت بڑا دھکہ ثابت ہوسکتی ہے کیوں کہ دہلی ہائی کورٹ کو بتایا گیا ہے کہ ہندوستان میں فروخت ہونے والی برانڈیڈ غذائیں انسانوں کے کھانے کے لائق نہیں ہیں ۔ انسانی صحت کے لیے یہ مضر ہیں ۔ حفظان صحت پر توجہ رکھنے والے اداروں نے دہلی ہائی کورٹ ک

نئی دہلی ۔ 6 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام) : ہوٹل یا تیار غذاؤں کو کھانے کے دلدادہ افراد کے لیے یہ خبر ایک بہت بڑا دھکہ ثابت ہوسکتی ہے کیوں کہ دہلی ہائی کورٹ کو بتایا گیا ہے کہ ہندوستان میں فروخت ہونے والی برانڈیڈ غذائیں انسانوں کے کھانے کے لائق نہیں ہیں ۔ انسانی صحت کے لیے یہ مضر ہیں ۔ حفظان صحت پر توجہ رکھنے والے اداروں نے دہلی ہائی کورٹ کو مطلع کیا ہے کہ ہندوستان میں بعض مقبول تیار غذاؤں کے تاجر اپنے گاہکوں کو غیر معیاری غذا سربراہ کررہے ہیں ۔ فوڈ سیفٹی اینڈ اسٹانڈرڈ اتھاریٹی آف انڈیا (FSSAI) نے دہلی ہائی کورٹ کو مطلع کیا کہ برانڈیڈ نام والی تیار غذائیں جیسے کے ایف سی ، ساگررنتن اور بیکانیر والا کی غذائیں انسانوں کے لیے ’ غیر محفوظ ‘ ہیں ۔ ماہ مارچ میں ہائی کورٹ نے نشاندہی کی تھی کہ دارالحکومت دہلی میں فروخت ہونے والے میوے اور ترکاریاں ماہرین کی کمیٹی کی رپورٹ کی بنیاد پر کھانے کے لائق نہیں ہیں ۔ ترکاریوں میں 5.3 فیصد جراثیم کش ادویات اور میوہ میں 0.5 فیصد جراثیم کش ادویات کے اثرات پائے جاتے ہیں ۔ کمیٹی کی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ جراثیم کش ادویات کا بے تحاشہ استعمال کیا جارہا ہے ۔

محکمہ کی جانب سے داخل کردہ حلفنامہ میں کہا گیا تھا کہ رنگ والی مصنوعی اشیاء کا استعمال کرتے ہوئے غذا کو خوشنما بنایا جارہا ہے ۔ جس سے انسانی معدہ میں مضر اثرات پیدا ہورہے ہیں ۔ رنگ یا دیگر مصنوعی اشیاء کا استعمال کرتے ہوئے تیار کی جانے والی غذاؤں سے انسانی معدہ متاثر ہوتا ہے ۔ کے ایف سی کے حاصل کردہ غذائی نمونوں میں بھی غیر معیاری شئے دستیاب ہوئی ہے لیکن کے ایف سی والوں نے ان الزامات کو مسترد کردیا ہے ۔ چکن کے لیے جو لال رنگ استعمال ہوتا ہے وہ بھی انسانی صحت کے لیے مضر ہے ۔ فوڈ سیفٹی اتھاریٹی نے مارکٹ سے چند غذائی اشیاء کے نمونوں کو حاصل کر کے جانچ کی تھی ۔ بیکانیر والا کی دوکانوں سے حاصل کردہ میوؤں اور ترکاری کی چٹنیوں میں بھی غیر معیاری اشیاء دستیاب ہوئی ہیں ۔ ان تمام دوکانداروں نے ان الزامات کو مسترد کردیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT