Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / کے سی آر خاندان بدعنوانیوں میں غرق

کے سی آر خاندان بدعنوانیوں میں غرق

سڑک اسکام معاملہ کو لوک ایوکت سے رجوع کرنے کا فیصلہ ، مدھو گوڑ یشکی
حیدرآباد ۔ 3 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : ترجمان آل انڈیا کانگریس کمیٹی مدھوگوڑ یشکی نے کے سی آر خاندان پر بدعنوانیوں میں غرق ہوجانے کا الزام عائد کرتے ہوئے گریٹر حیدرآباد سڑکوں کے اسکام میں لوک ایوکت سے رجوع ہونے کا اعلان کیا ۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مدھو گوڑیشکی نے کہا کہ سارے ملک میں ٹی آر ایس حکومت بدعنوانیوں اور کسانوں کی خود کشی واقعات میں سرفہرست ہے ۔ گریٹرحیدرآباد کے حدود میں سڑکوں کی تعمیرات پر 337 کروڑ روپئے خرچ کئے گئے تو اس میں 100 کروڑ روپئے کا اسکام ہوا ہے ۔ جس پر چیف منسٹر کے سی آر اور ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق کے ٹی آر نے کوئی ردعمل کا اظہار نہیں کیا وہ اس اسکام پر تحقیقات کے لیے لوک ایوکت سے رجوع ہوں گے ۔ شہر حیدرآباد میں 300 کروڑ روپئے کے ڈرگ اسکام بھی منظر عام پر آیا ہے ۔ اس پر بھی چیف منسٹر اور ان کے فرزند نے کوئی ردعمل کا اظہار نہیں کیا ۔ کے سی آر کے ارکان خاندان پوری طرح بدعنوانیوں میں غرق ہونے کے ساتھ ساتھ اقتدار کے گھمنڈ اور تکبر میں مبتلا ہوگئے ہیں ۔ نلوں کے ذریعہ ایک قطرہ پانی بھی نہیں آیا مگر واٹر گرڈ پراجکٹ پر 8000 کروڑ روپئے خرچ کردئیے گئے ۔ غریب عوام کے لیے ڈبل بیڈ روم مکانات نہیں دئیے مگر چیف منسٹر اپنے محل نما قیام گاہ اور کیمپ آفس پر 50 کروڑ روپئے خرچ کررہے ہیں ۔ ریاست میں صنعتوں کے قیام اور روزگار کی فراہمی کے معاملے میں ریاستی وزیر کے ٹی آر عوام کو گمراہ کررہے ہیں ۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد کتنے بے روزگار نوجوانوں کو روزگار ملا ہے اس کی وضاحت کرنے کا کے ٹی آر سے مطالبہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ سماج کا کوئی بھی طبقہ حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں ہے ۔ کسان طلبہ اور بیمار افراد سب کے سب ٹی آر ایس حکومت سے بدظن ہیں اور حکومت کو سبق سکھانے کے لیے موقع کی تلاش میں ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT