Thursday , June 21 2018
Home / Top Stories / کے سی آر کو 2019 ء میں مرکز میں اہم رول کا یقین

کے سی آر کو 2019 ء میں مرکز میں اہم رول کا یقین

حکومت تیسرے محاذ کی ہوگی، کانگریس سے تائید کے حصول میں اعتراض نہیں، قائدین سے مشاورت
حیدرآباد ۔ 21 ۔ مئی (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے کرناٹک کی صورتحال اور خاص طور پر جنتا دل سیکولر کی زیر قیادت حکومت کی تشکیل کو ملک میں تیسرے محاذ کے قیام کے سلسلہ میں فال نیک قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ 2019 ء کے انتخابات میں بی جے پی اور کانگریس کسی کو بھی واضح اکثریت حاصل نہیں ہوگی اور تیسرا محاذ تشکیل حکومت میں اہم رول ادا کرے گا ۔ باوثوق ذرائع کے مطابق کے سی آر نے تیسرے محاذ کی تشکیل اور علاقائی جماعتوں سے تعاون حاصل کرنے کے مسئلہ پر اپنے قریبی رفقاء سے مشاورت کی۔ انہوں نے چہارشنبہ کو بنگلور میں ایچ ڈی کمارا سوامی کی چیف منسٹر کی حیثیت سے حلف برداری تقریب میں شرکت اور وہاں پہنچنے والے دیگر علاقائی جماعتوں کے قائدین سے ملاقات کا منصوبہ بنایا ہے ۔ ذرائع کے مطابق چیف منسٹر نے قائدین سے کہا کہ مرکز میں تیسرے محاذ کی حکومت کی تشکیل کیلئے ضرورت پڑنے پر کانگریس پارٹی کی تائید حاصل کی جائے گی ۔ کے سی آر کا یہ موقف واضح ہے کہ تشکیل حکومت کیلئے کانگریس کو قیادت نہیں دی جائے گی بلکہ اسے تیسرے محاذ کی تائید کرنا ہوگا۔ تیسرے محاذ کے قیام کا مقصد کانگریس اور بی جے پی کا متبادل فراہم کرنا ہے کیونکہ بقول کے سی آر دونوں پارٹیاں عوام کی توقعات پر کھرا اترنے میں ناکام ہوچکی ہیں۔ ذرائع کے مطابق چیف منسٹر نے بتایا کہ جولائی یا اگست تک تیسرے محاذ کی شکل تیار ہوجائے گی اور اس میں شامل ہونے والی جماعتوں کے نام منظر عام پر آجائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ مختلف ریاستوں سے علاقائی جماعتوںکے قائدین ان سے ربط میں ہیں اور عنقریب نئی دہلی کا دورہ کرتے ہوئے وہاں ابتدائی تیاریوں کا اجلاس منعقد کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ کے سی آر نے حالیہ عرصہ میں جنتا دل سیکولر ، ترنمول کانگریس ، سماج وادی پارٹی جیسی اہم علاقائی جماعتوں کے قائدین سے ملاقاتیں کی ہیں۔ انہیں امید ہے کہ بی ایس پی ، راشٹریہ جنتا دل ، بیجو جنتا دل ، نیشنل کانفرنس ، ڈی ایم کے اور دیگر چھوٹی جماعتیں محاذ میں شامل ہونے کیلئے تیار ہوجائیں گی۔ کے سی آر نے کہا کہ 2019 ء میں اہم ترین سیاسی تبدیلیاں رونما ہوسکتی ہیں۔ کرناٹک کے نتائج سے یہ واضح ہوچکا ہے کہ عوام کانگریس اور بی جے پی سے مایوس ہوچکے ہیں اور انہیں کسی متبادل محاذ کی تلاش ہے۔ تیسرے محاذ کی قیادت کون کرے گا ، اس بارے میں ابھی تک کے سی آر نے کوئی اشارہ نہیں دیا۔ ان کے قریبی ذرائع کے مطابق کے سی آر تھرڈ فرنٹ کی قیادت کیلئے چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی کو پیشکش کرسکتے ہیں۔ تیسرے محاذ کی سرگرمیوں میں شدت کے بعد تلنگانہ میں کے سی آر کے جانشین کے انتخاب کے مسئلہ پر سیاسی سرگرمیاں تیز ہوجائیں گی ۔ کے سی آر نے اپنے فرزند کے ٹی راما راؤ کو جانشین مقرر کرنے کی حکمت عملی تیار کرلی ہے۔

TOPPOPULARRECENT