Wednesday , December 12 2018

کے سی آر کیخلاف سیما آندھرا میں مقدمات پر برہمی کا اظہار

حیدرآباد کو گورنر کے زیرانتظام بنانے تلگودیشم کوشاں، ایس وینو گوپال کا بیان

حیدرآباد کو گورنر کے زیرانتظام بنانے تلگودیشم کوشاں، ایس وینو گوپال کا بیان
حیدرآباد ۔ 8۔ جون (سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے قائد اور نئی دہلی میں تلنگانہ حکومت کے خصوصی نمائندے ایس وینو گوپال چاری نے سیما آندھرا علاقوں میں چیف منسٹر تلنگانہ چندر شیکھر راؤ کے خلاف مقدمات درج کئے جانے پر سخت برہمی کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ ارکان اسمبلی کی خریدی کے معاملہ میں تلگو دیشم کے بے نقاب ہونے پر برہم آندھراپردیش حکومت نے منصوبہ بند سازش کے ذریعہ کے سی آر کے خلاف جوابی مقدمات درج کرائے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کرپشن اور بے قاعدگیوں کے انکشاف کے بعد آندھراپردیش حکومت بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکی ہیں۔ وینوگوپال چاری نے کہا کہ بے قاعدگیوں کے الزامات سے خود کو بچانے کیلئے جوابی مقدمات درج کرنے کی کارروائی کی گئی تاکہ عوام کو گمراہ کیاجاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ آندھراپردیش حکومت غیر ضروری طور پر اس مسئلہ کو دونوں ریاستوں کے عوام کے درمیان تنازعہ کا سبب بنانے کی کوشش کر رہی ہے جبکہ اس اسکام کا تعلق کرپشن سے ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ریاستوں کے درمیان اس مسئلہ کو تنازعہ کی وجہ نہیں بنانا چاہئے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ حیدرآباد کو گورنر کے زیر انتظام کرنے کی سازش کے تحت تلگو دیشم قائدین کے سی آر کے خلاف مقدمات درج کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فون ریکارڈنگ اور ٹیاپنگ میں کافی فرق ہے۔ چندرا بابو نائیڈو نے ٹی آر ایس رکن اسمبلی کو جو فون کیا تھا اسے ریکارڈ کرتے ہوئے اینٹی کرپشن بیورو کو پیش کیا گیا۔ وینو گوپال چاری نے چندرا بابو نائیڈو کے ٹیلیفون کالز کی ٹیاپنگ کی تردید کی اور کہا کہ تلنگانہ حکومت کو اس طرح کی ٹیاپنگ کی کوئی ضرورت نہیں ہے اور نہ ہی وہ اس طرح کی سرگرمیوں پر یقین رکھتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT