Tuesday , December 19 2017
Home / شہر کی خبریں / کے سی آر کی توجہ اب گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن انتخاب پر مرکوز

کے سی آر کی توجہ اب گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن انتخاب پر مرکوز

شہر میں ٹی آر ایس کے تعلق سے سروے کے حوصلہ افزاء نتائج ، ورنگل انتخابی کامیابی کے بعد چیف منسٹر کی پریس کانفرنس
حیدرآباد۔ 24 نومبر (سیاست نیوز) ورنگل لوک سبھا حلقہ میں شاندار کامیابی کے ساتھ ہی چیف منسٹر کے سی آر نے گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے مجوزہ انتخابات پر توجہ مرکوز کردی ہے۔ انہوں نے گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے مجوزہ انتخابات میں ٹی آر ایس کی شاندار کامیابی کا دعویٰ کیا ہے اور اس بات کا اشارہ دیا کہ 30 جنوری تک یہ مرحلہ مکمل کرلیا جائے گا۔  میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے چیف منسٹر نے کہا کہ انہوں نے گریٹر حیدرآباد میں پارٹی کے موقف کے بارے میں سروے کرایا جس کے نتائج حوصلہ افزاء ہیں۔ جی ایچ ایم سی کی 80 سے زائد نشستوں پر ٹی آر ایس کی کامیابی یقینی ہے۔ چیف منسٹر نے اعلان کیا کہ 30 جنوری تک گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن، نارائن کھیڑ اسمبلی حلقہ کے ضمنی چناؤ اور دیگر اہم سرکاری ذمہ داریوں کی تکمیل کرلیں گے اور عوام سے ملاقات کے لئے بس یاترا کا آغاز کیا جائے گا۔ چیف منسٹر ہر ضلع میں 8 تا 10 دن اپنے وزراء کے ساتھ قیام کرتے ہوئے مقامی مسائل کی یکسوئی کریں گے۔ چیف منسٹر نے آئندہ ڈھائی ماہ میں ریاست کے تمام کنٹراکٹ ملازمین کی خدمات کو باقاعدہ بنانے کا اعلان کیا۔ اس کے علاوہ اساتذہ کی مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کے لئے جلد ہی ڈسٹرکٹ سلیکشن کمیٹی امتحانات منعقد کئے جائیں گے۔ چیف منسٹر نے حکومت کی مختلف جاریہ اسکیمات کی تفصیل بیان کیں اور ساتھ ہی انتخابی وعدوں پر مبنی کئی اعلانات کئے۔ انہوں نے کہا کہ کنٹراکٹ ملازمین کی خدمات کو باقاعدہ بنانے کے وعدہ کی تکمیل دو ماہ میں کردی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے درمیان ملازمین کی تقسیم کا عمل ایک ہفتہ میں مکمل ہوجائے گا، جس کے بعد کنٹراکٹ ملازمین کو مختلف محکمہ جات میں ضم کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ کی مخلوعہ جائیدادوں کی نشاندہی کا کام جاری ہے اور اندرون 15 یوم ڈی ایس سی منعقد ہوگا۔ انہوں نے 98 اور 2000 ڈی ایس سی کے کوالیفائیڈ ٹیچرس کو بھی روزگار فراہم کرنے کا تیقن دیا ہے۔ غریبوں کے لئے دو بیڈروم پر مشتمل مکانات کی تعمیر کی اسکیم میں صحافیوں کو خصوصی کوٹہ الاٹ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے چیف منسٹر نے بتایا کہ پریس اکیڈیمی کے صدرنشین سے مشاورت کے بعد اسے قطعیت دی جائے گی۔ آئندہ سال مارچ میں مزید ایک لاکھ مکانات کی تعمیر کے منصوبہ کو بجٹ میں شامل کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی وعدے کے مطابق آئندہ دو سال میں ریاست کے ہر گھر کو پینے کے پانی کا کنکشن فراہم کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت تمام مذاہب کے تہواروں کو یکساں عقیدت و احترام کے ساتھ منانے پر یقین رکھتی ہے جس طرح رمضان المبارک میں حکومت نے انتظامات کئے تھے، اسی طرح کرسمس کے موقع پر 2 لاکھ غریب عیسائی خاندانوں میں مفت کپڑے تقسیم کئے جائیں گے۔ ہر اسمبلی حلقہ میں کرسمس کے موقع پر مفت لنچ کا اہتمام کیا جائے گا اور اس سلسلے میں حکومت خصوصی بجٹ جاری کرے گی۔ کے سی آر نے غریب لڑکیوں کی شادی کے موقع پر امداد سے متعلق ’’کلیان لکشمی‘‘ اسکیم کے دائرہ میں تمام بی پی ایل کارڈ ہولڈرس کو شامل کرنے کے فیصلے سے واقف کرایا اور بتایا کہ بی سی اور او بی سی طبقات کو بھی اس اسکیم سے آئندہ مالیاتی سال سے استفادہ کا موقع رہے گا۔ وزراء کی کارکردگی بہتر بنانے کے لئے چیف منسٹر نے ہر وزیر کے تحت 25 کروڑ روپئے ڈیولپمنٹ فنڈ مختص کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ وزراء اپنے اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے ترقیاتی کاموں کو منظوری دے سکیں۔ انہوں نے بتایا کہ جنوری کے بعد وہ بس یاترا کے ذریعہ اضلاع کا دورہ کریں گے جس میں وزراء بھی ان کے ہمراہ ہوں گے۔ کے سی آر نے کہا کہ وہ حیدرآباد میں کم اور اضلاع میں زیادہ قیام کرتے ہوئے عوام اور پارٹی کارکنوں سے روبرو ہوں گے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ حکومت کی تشکیل کے بعد وہ پارٹی کیڈر سے قدرے دور ہوچکے ہیں۔ چیف منسٹر نے کہا کہ آئندہ ایک ہفتہ میں نامزد عہدوں پر تقررات کا عمل شروع کردیا جائے گا اور اندرون ایک ماہ نامزد عہدوں پر تقررات مکمل کرلئے جائیں گے جن میں مارکٹ کمیٹی، مندر کمیٹی، بورڈس اور کارپوریشن شامل ہوں گے۔ انہوں نے پارٹی کارکنوں کے لئے ہر ضلع میں ٹریننگ کیمپس کے انعقاد کا بھی اعلان کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT