Saturday , December 15 2018

کے وی پی رامچندر راؤ کی گرفتاری کیلئے امریکہ کی نوٹس

آندھرا پردیش میں ٹیٹانیم کانکنی، رشوت کیلئے ریاکٹ کی سازش

آندھرا پردیش میں ٹیٹانیم کانکنی، رشوت کیلئے ریاکٹ کی سازش
حیدرآباد۔/23اپریل، ( پی ٹی آئی) کانگریس کے رکن راجیہ سبھا کے وی پی رامچندر راؤ بھلے ہی اپنے سیاسی اثر و رسوخ کے سبب ہندوستان میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے جال سے بچ نکلتے رہے ہیں، لیکن اب ایسا محسوس ہوتا ہے کہ انہیں پکڑنے کیلئے امریکی قانون کے طویل ہاتھ اب ان کی گردن تک پہونچ رہے ہیں۔ آندھرا پردیش میں ٹیٹانیم کانکنی سے متعلق ایک بین الاقوامی ریاکٹ کی سازش و ساز باز کے ضمن میں امریکہ اب کے وی پی رامچندر راؤ کی عبوری گرفتاری کے لئے اصرار کررہا ہے۔

کانگریس کے سینئر بااثر لیڈر کے وی پی رامچندر راؤ ماضی میں آنجہانی چیف منسٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کے ست راست اور بااعتماد رفیق کار رہے ہیں۔ وائی ایس آر بھی کے وی پی کو اکثر اپنی آتما ( روح ) قرار دیا کرتے تھے۔ کے وی پی اس سال فروری میں راجیہ سبھا کے لئے دوسری مرتبہ منتخب ہوئے ہیں۔ برائے ریکارڈوہ پہلے ریاستی حکومت کے مشیر برائے عوامی اُمور تھے اور انہیں کابینی وزیر کا درجہ حاصل تھا۔ بعد ازاں وائی ایس آر چیف منسٹر کے عہدہ پر فائز ہونے کے بعد وہ کمیٹی برائے عوامی تحفظ و سلامتی کے چیرمین بنائے گئے تھے۔

یہ بات بھی دلچسپ ہے کہ وائی ایس آر کی موت کے بعد کے روشیا کے دور میں بھی کے وی پی رامچندر راؤ بدستور کلیدی رول ادا کرتے رہے تھے حتیٰ کہ کرن کمار ریڈی کے دور میں بھی ان کا اثر و رسوخ برقرار رہا تھا۔ کے وی پی کے فرزند خلیج عرب میں بشمول توانائی پلانٹس مختلف بزنس چلاتے ہیں۔ این ایس ایس کے مطابق امریکی وزارت انصاف نے کہا ہے کہ آندھرا پردیش میں ٹیٹانیم کانکنی کے ایک ریاکٹ کے تحت ہندوستانی عہدیداروں کو رشوت دینے کیلئے 18.5 ملین امریکی ڈالر کی ایک اسکیم بنائی گئی تھی جس میں یوکرین کے ایک صنعت کار دیمتری فرتاش ، کے وی پی اور دیگر چار کا مشتبہ رول ہے چنانچہ امریکہ کی ایک عدالت نے ان تمام کے خلاف فردِ جرم عائد کیا ہے۔ اس صورت حال میں سی بی آئی امریکی وارنٹ پر تعمیل کرتے ہوئے مدعی کو چیف میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ کی پٹیالیہ ہاوز نئی دہلی کی عدالت ( عدالت اخراج و حوالگی) میں پیش کرے گی،جس کی منظوری کی صورت میں کے وی پی کو مقدمہ کا سامنا کرنے کیلئے امریکہ کے حوالہ کیا جاسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT