Wednesday , December 12 2018

گانجہ کے چاکلیٹ اور بسکٹس فروخت کرنے کی کوشش، آیورویدک چاکلیٹس کا نام، پولیس کو اصل سرغنہ کی تلاش، اکسائز انفورسمنٹ کی کارروائی

حیدرآباد 8 اپریل (سیاست نیوز) اسکولس اور کالجس میں زیرتعلیم طلباء و طالبات کے والدین اور ذمہ داران کو بے حد احتیاط برتنے کی ضرورت ہے کیوں کہ گانجہ اسمگلرس اب اسکولس اور کالجس کے طلباء و طالبات کو نشانہ بنارہے ہیں اور اپنی تجارت کو فروغ دینے کے لئے باقاعدہ گانجے سے چاکلیٹ اور بسکٹس تیار کرکے بہ آسانی کم قیمتوں پر فروخت کررہے ہیں اور پولیس کے مطابق گانجہ مافیا ریاست بہار سے اپنے دھندے کا آغاز کرکے پرانے شہر حیدرآباد کے بے روزگار افراد کے ذریعہ گانجہ کے چاکلیٹ اور بسکٹس فروخت کرنے کی کوشش کررہا ہے اور ان چاکلیٹس کو مشہور معروف کارپوریٹ تعلیمی اداروں کے پاس واقع پان کے ڈبوں میں آیورویدک چاکلیٹس کے نام پر فروخت کیا جارہا ہے اور پرانے شہر کے ایک کارپوریٹ تعلیمی ادارے کے پاس ان چاکلیٹس کو فروخت کرنے کے دوران اکسائز انفورسمنٹ اسسٹنٹ کمشنر مسٹر انجی ریڈی اور ان کی ٹیم نے گرفتار کرلیا ہے اور اس بات کا پتہ چلا ہے کہ باقی اسکولس کے طلبہ بھی اکثر گانجہ سے تیار شدہ چاکلیٹس کے استعمال کے عادی بن رہے ہیں۔ پرانے شہر میں گانجہ کی فروخت سے متعلق پولیس کو باوثوق ذرائع سے ملنے والی اطلاعات کے بعد سٹی ڈی سی ویوکانند ریڈی کے احکامات کے بعد اکسائز انفورسمنٹ عہدیداران نے ایک گھر پر دھاوا کرتے ہوئے لال بہادر سنگھ نامی ایک شخص کو گرفتار کرلیا اور لال بہادر سنگھ کو دھاوے کی قبل ازوقت اطلاع ملنے کی وجہ سے اس نے گانجہ محفوظ مقام منتقل کرکے پولیس کی تحقیقات کے رُخ کو موڑ دیا مگر اس مقام پر خالی گٹکھا کی پاکٹ کے مانند پڑی ہوئی ایک پاکٹ پر اے ای ایس انجی ریڈی کی نظر اور اس پاکٹ پر ٹائیگر منکا نامی لوگو شیر کے ٹریڈ مارک سے طبع شدہ اس پیاکٹ پر آیورویدک میڈیسن لکھا ہوا پایا گیا اور سابق میں اس ٹریڈ مارک اور لوگو سے کسی بھی طرح کا گٹکھا تیار نہ کئے جانے کی وجہ سے انجی ریڈی کے شکوک و شبہات میں اضافہ ہوا۔ بعدازاں پولیس نے اس مشتبہ شخص کے مکان کی ہر زاویہ سے تلاشی لینے پر مکان میں ایک محفوظ مقام پر چھپائے گئے 70 چاکلیٹس، تین کیلو گانجہ پاؤڈر، 650 گرام گیلا گانجہ برآمد کیا۔ پولیس عہدیداران کی تحقیقات کے مطابق طلبہ کو بہ آسانی خریدنے کی سہولت کے لئے آیورویدک چاکلیٹ کے نام پر صرف 20 روپئے میں چاکلیٹ فروخت کئے جارہے ہیں اور 50 گرام کی پاکٹ 500 روپیوں میں فروخت کی جارہی ہے۔ پولیس تحقیقات کے مطابق لوئر دھول پیٹ کا ساکن برج راج سنگھ نامی شخص سربراہ کررہا ہے اور یہ چاکلیٹس ریاست بہار آیورویدک میڈیسن کی شکل میں تیار کرکے مقامی طور پر ایجنٹس کے ذریعہ فروخت کیا جارہا ہے اور پولیس کے مطابق برج راج سنگھ کی گرفتاری سے اس بات کا پتہ چل جائے گا کہ گانجہ سے مزید کیا کیا اشیاء تیار کی جارہی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT