Tuesday , June 19 2018
Home / جرائم و حادثات / گاڈس جم قتل کیس کے ملزمین کی گواہوں کو دھمکیاں

گاڈس جم قتل کیس کے ملزمین کی گواہوں کو دھمکیاں

حیدرآباد ۔ /18 فبروری (سیاست نیوز) سنتوش نگر کے گاڈس پاور جم میں 2012 ء میں پیش آئے احمد علی خان عرف الیاس قتل کیس میں گواہوں کو مبینہ طور پر اثرانداز کرنے اور گواہی دینے سے دھمکانے کا الزام عائد کرتے ہوئے مقتول کی بیوی حبیبہ بیگم نے آج ڈپٹی کمشنر پولیس ساوتھ زون سے ایک تحریری شکایت درج کروائی ہے۔ درخواست میں حبیبہ بیگم نے یہ بتایا ہیکہ

حیدرآباد ۔ /18 فبروری (سیاست نیوز) سنتوش نگر کے گاڈس پاور جم میں 2012 ء میں پیش آئے احمد علی خان عرف الیاس قتل کیس میں گواہوں کو مبینہ طور پر اثرانداز کرنے اور گواہی دینے سے دھمکانے کا الزام عائد کرتے ہوئے مقتول کی بیوی حبیبہ بیگم نے آج ڈپٹی کمشنر پولیس ساوتھ زون سے ایک تحریری شکایت درج کروائی ہے۔ درخواست میں حبیبہ بیگم نے یہ بتایا ہیکہ 19 مارچ سال 2012ء میں ان کے شوہر احمد علی خان عرف الیاس کا ظفرپہلوان، چھوٹا محمد اور دیگر ساتھیوں نے مبینہ طور پر بہیمانہ طور پر قتل کردیا تھا

اور کیس کی سماعت کا آغاز میٹرو پولیٹن سیشن جج کے اجلاس پر آغاز ہوچکا ہے لیکن اس کیس کے گواہ اپنا بیان قلمبند کروانے کیلئے خوفزدہ ہے۔ انہوں نے اپنی درخواست میں یہ الزام عائد کیا کہ ان کے دیور برکت علی خان حالیہ دنوں میں عدالت میں قتل کیس کے سلسلہ میں گواہی کیلئے عدالت پہنچے تھے لیکن اس کیس کے ملزمین نے مبینہ طور پر تقریباً 100 روڈی عناصر کے ہمراہ انہیں خوفزدہ کیا اور وہ وہاں سے لوٹ آنے پر مجبور ہوگئے۔ حبیبہ بیگم نے ڈی سی پی سے کی گئی شکایت میں مزید بتایا کہ ملزمین طاقت اور دولت کے ذریعہ گواہوں پر اثرانداز ہورہے ہیں اور ان کے شوہر کے قتل کیس کے گواہ سمروز نے انہیں یہ بات بتائی ہیکہ وہ عدالت میں حقائق بیان کرنے کیلئے تیار ہیں لیکن انہیں پولیس کی حفاظت ضروری ہے۔ مقتول کی بیوی نے یہ گذارش کی ہیکہ اس کیس کے تمام گواہوں کو پولیس کی حفاظت فراہم کی جائے اور جو گواہ عدالت میں منحرف ہوچکے ہیں ان کا دوبارہ بیان قلمبند کروایا جائے۔

حبیبہ بیگم نے بتایا کہ اس کیس کے ملزمین مبینہ طور پر بدنام زمانہ اور خطرناک عناصر ہیں، جن کا وسیع جرائم شدہ ریکارڈ ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ان کے شوہر الیاس جو ایک کیس کے گواہ تھے، عدالت میں گواہی دینے کے سبب مبینہ طور پر ان کا ظفرپہلوان اور دیگر نے قتل کردیا تھا۔ اس کیس کے تمام گواہ خوفزدہ ہیں اور گواہوں کو پولیس سیکوریٹی و پولیس پکٹ تعینات کرنے سے انہیں اس کیس میں انصاف حاصل ہوسکتا ہے۔ حبیبہ بیگم نے بعدازاں میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ وہ ڈپٹی کمشنر پولیس ساؤتھ زون مسٹر وی ستیہ نارائنا سے راست ملاقات کرکے ملزمین کی جانب سے گواہوں کو دھمکانے کے حقائق بیان کرنا چاہتی تھیں لیکن ان کے دفتر کا عملہ انہیں ملاقات کرنے سے روک دیا۔

TOPPOPULARRECENT