Tuesday , October 23 2018
Home / شہر کی خبریں / گجرات اسمبلی الیکشن کے تمام ایگزٹ پولس غلط

گجرات اسمبلی الیکشن کے تمام ایگزٹ پولس غلط

حیدرآباد۔18 (سیاست نیوز) گجرات انتخابات میں تمام اگزٹ پول ایک مرتبہ پھر سے غلط ثابت ہوگئے ۔ گجرات انتخابات کے کے دوسرے مرحلہ کے اختتام کے ساتھ ہی تمام قومی ٹیلی ویژن چیانلس نے بھارتیہ جنتا پارٹی کی بھاری کامیابی کی پیش قیاسی کرنی شروع کردی اور کانگریس کو 70 سے زیادہ نشستیں کسی بھی چیانل نے نہیں دکھائی ۔ ملک میں انتخابات کے دوران سروے کرنے والے کسی بھی ادارے کی جانب سے کئے گئے سروے میں یہ بات نہیں تھی کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کو 100 سے کم نشستیں آئیں گی بلکہ سب سے کم نشستیں بھارتیہ جنتا پارٹی کو 105 دکھائی جا رہی تھی اور یہ کہا جا رہا تھا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کو 2تا7نشستوں کا نقصان ہوگا لیکن کسی بھی ادارہ نے یہ نہیں کہا کہ بی جے پی کو 16نشستوں کا نقصان برداشت کرنا پڑے گا۔ سروے رپورٹس میں اس بات کی طرف اشارہ کیا گیا تھا کہ ریاست گجرات میں بھارتیہ جنتا پارٹی ناقابل تسخیر قوت ہے اور اس کو شکست دینا کانگریس یا اس کے اتحادی و حمایتی قوتوں کے بسکی بات نہیں ہے۔ انتخابی سروے کرنے والے ادارو ںکی جانب سے رائے دہندوں کے رجحان اور ان کے نظریات کی بنیاد پر نمونہ اکٹھا کرتے ہوئے سروے کئے جاتے ہیں لیکن اس مرتبہ گجرات میں بھی دہلی کے عام آدمی پارٹی کے انتخابات کی طرح اگزٹ پولس غلط ثابت ہوئے اور ان اگزٹ پول کے ذمہ دار وں کی جانب سے یہ کہا جاتا رہا ہے کہ انہوں نے گجرات کے تمام اسمبلی حلقہ جات کا جائزہ لینے کے بعد ہی یہ رپورٹ تیار کی ہے لیکن ان تمام سروے رپورٹس اور اگزٹ پولس کے برخلاف کانگریس کو قابل قدرکامیابی اور بھارتیہ جنتا پارٹی کو نشستو ںمیں بھاری نقصان کے سبب یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ عوام کے رائے دہی کے نظریہ کو کوئی اگزٹ پول شمار نہیں کرسکتا۔سابق میں دہلی کے اسمبلی انتخابات میں بھی یہ بات ثابت ہوچکی تھی ۔ اگزٹ پول کرنے والے ادارو ںکے سربراہان و ماہرین کا کہنا ہے کہ نئی نسل نے بھارتیہ جنتا پارٹی کے حق میں ووٹ کا استعمال نہیں کیا ہے جبکہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے روایتی رائے دہندو ںمیں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT