گجرات الیکشن کے بعد کرناٹک کا سیاسی منظر تبدیل ہوگا

کانگریس اور بی جے پی دونوں بڑی رقومات صرف کررہے ہیں: دیوے گوڑا
ہاسن (کرناٹک )، 15نومبر (سیاست ڈاٹ کام ) سابق وزیراعظم و جنتادل سیکولر کے صدر ایچ ڈی دیوے گوڑا نے خیال ظاہر کیا کہ گجرات اور ہماچل پردیش اسمبلی کے انتخابات کے بعد کرناٹک میں سیاسی منظر نامہ تبدیل ہوگا۔ انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ” اگر کانگریس کو دھکہ پہنچتا ہے تو اس پارٹی کے کئی لیڈر دیگر جماعتوں میں شامل ہوسکتے ہیں۔ اسی طرح اگر بی جے پی کو شکست ہوتی ہے تو اس کی پارٹی سے انحراف ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے بعض لیڈر پارٹی چھوڑنے تیار ہیں تاہم مستقبل کا ان کا کوئی واضح ویژن نہیں ہے ۔ گجرات کے انتخابات کے سلسلہ میں انہوں نے کہا کہ کانگریس او ربی جے پی دونوں بڑے پیمانے پر رقومات صرف کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا ”میں نے گجرات کا دورہ نہیں کیا اور میں اس بات کی پیش گوئی نہیں کرسکتا کہ کون جیتے گا لیکن مجھے یقین ہے کہ دونوں رقم صرف کررہے ہیں۔ ” انہوں نے اس احساس کا ظہار کیا کہ آئندہ دو ماہ کے دوران ریاست میں سیاسی منظر نامہ میں مکمل تبدیلی ہوگی ۔ کے پی ایم ای ایکٹ پر ڈاکٹرس کے احتجاج کے مسئلہ پر دیوے گوڑا نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اس ترمیمی بل کی ضرورت پر سوال اٹھائے ۔ انہوں نے کہا کہ اس بل میں ڈاکٹرس کو سزا دینے کی گنجائش ہے اورمیں یہ کہتا ہوں کہ مسائل کے حل کی کمیٹی کے سامنے نمائندگی کے لئے وکلاء کو کوئی موقع حاصل نہیں رہے گا۔ یہ کہتے ہوئے کہ ایک ایسے وقت جب انتخابات قریب ہیں ایوان میں اس بل کو لانے کی کیا ضرورت تھی ۔ اس ترمیمی بل میں متوازن ایکٹ سمیت حکومت کوچاہئے تھا کہ وہ مسودہ کو حتمی شکل دینے سے پہلے ہر کسی کو بھروسہ میں لیتی ۔ ڈاکٹرس کے ایک وفد نے ان سے ملاقات کرتے ہوئے مختلف مسائل سے انہیں واقف کروایا۔

TOPPOPULARRECENT