Saturday , August 18 2018
Home / Top Stories / گجرات انتخابات :بی جے پی کیلئے زبردست جھٹکہ : راہول گاندھی

گجرات انتخابات :بی جے پی کیلئے زبردست جھٹکہ : راہول گاندھی

انتخابی مہم میںوزیراعظم نے جی ایس ٹی ونوٹ بندی پربات نہیں کی، مودی کی ساکھ و صداقت پر سوالات اُٹھنے لگے ہیں

نئی دہلی۔ 19 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کے صدر راہول گاندھی نے اج کہا کہ گجرات کے انتخابی نتائج بی جے پی کیلئے ’’زبردست جھٹکہ‘‘ ہیں اور ان سے وزیراعظم نریندر مودی کی ساکھ و صداقت پر سوالات اُٹھنے لگے ہیں۔ جن کی قیادت میں ان کی پارٹی اس ریاست میں انتہائی معمولی اکثریت کے ساتھ جیت حاصل کی ہے۔ راہول گاندھی نے دعویٰ کیا کہ ’’گجرات کے انتخابات نے بتادیا ہے کہ ملک اب مودی پر بھروسہ کرنے تیار نہیں ہے۔ راہول گاندھی نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’یہ سمجھا گیا تھا کہ کانگریس گجرات میں بی جے پی سے مقابلہ نہیں کرسکے گی، آپ نے نتائج کو دیکھا ہے اور یہ گجرات میں بی جے پی کے لئے زبردست جھٹکہ ہیں۔1995ء کے دوران بی جے پی اپنے بل بوتے پر پہلی مرتبہ گجرات میںحکومت بنائی تھی اور 22 سال سے برسراقتدار ہے لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ اس کے منتخب ارکان کی تعداد 99 تک گھٹ گئی ہے اور وہ 100 تک بھی نہیں پہونچ سکی جبکہ انتخابات سے قبل 150 نشستیں حاصل کرنے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔ راہول نے کہا کہ ’’یہ بہت اچھے نتائج اور کانگریس کیلئے اخلاقی فتح ہیں۔ ہم ہار تو گئے لیکن اگر جیت بھی جاتے تو معمولی کمی کے سبب درکار اکثریت کے حصول سے محروم رہے گی۔ مودی کے اس ادعا پر کہ بی جے پی کی جیت دراصل عوام کی جانب سے ان کے ترقیاتی ایجنڈہ اور جی ایس ٹی جیسے معاشی اصلاحات کی توثیق و تائید ہے۔ راہول نے ایک سوال پر جواب دیا کہ ’’یہ بھی بڑی عجیب بات ہے کیونکہ انہوں (مودی) نے اپنی انتخابی تقاریر کے دوران نہ تو کبھی ترقی اور نہ ہی جس ایس ٹی یا نوٹ بندی پر کوئی بات کی تھی‘‘۔ راہول گاندھی نے کہا ہے کہ ’’مودی جی کی ساکھ و صداقت پر ایک بڑا سوال اٹھا ہے۔ یہ بالکل واصح ہے کہ مودی جی کو ساکھ و صداقت کا مسئلہ درپیش ہے اور وہ کافی دشواری محسوس کررہے ہیں، کیونکہ وہ جو کچھ کررہے ہیں، ان کے تمام کارکن اور تنظیم اس کو دہرایا کرتے ہیں‘‘۔ راہول نے کہا کہ لیکن (اب مسئلہ یہ ہے کہ) ملک ان کی باتیں نہیں سن رہا ہے۔ گجرات انتخابات نے یہ دکھا دیا ہے۔ آنے والے دنوں میں آپ صاف طور پر یہ دیکھیں گے‘‘۔واضح رہے کہ گجرات کی 182 رکنی اسمبلی کیلئے بی جے پی محض 99 نشستوں پر ہی کامیابی ہوسکی جبکہ اس کا دعویٰ تھا کہ وہ 150 نشستیں حاصل کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT