Sunday , August 19 2018
Home / شہر کی خبریں / گجرات انتخابات میں ’ چائے پر چرچہ ‘ سے گریز

گجرات انتخابات میں ’ چائے پر چرچہ ‘ سے گریز

سال 2014 انتخابات بی جے پی کے لیے کارگرد ثابت ، جی ایس ٹی و کرنسی تنسیخ سے حالات یکسر تبدیل
حیدرآباد۔11 ڈسمبر(سیاست نیوز) 2014عام انتخابات میں ہوئی چائے پر چرچہ گجرات میں کیوں نہیں کی گئی ! گجرات اسمبلی انتخابات میں چائے پر چرچہ‘ ہرہر مودی گھر گھر مودی‘ اور وہ نعرے جو عام انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی کیلئے کارگر ثابت ہوئے تھے ان نعروں کا استعمال نہیں کیا گیا اور نہ ہی ان نعروں کے استعمال کی سمت توجہ دی گئی کیونکہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی مقامی قیادت کو بھی اس بات کا اندازہ تھا کہ ریاستی اسمبلی انتخابات میں “Modi Mania”نہیں چلے گا کیونکہ کرنسی تنسیخ اور جی ایس ٹی کے سبب گجرات کے عوام میں بھی ناراضگی پائی جاتی ہے اور فوری طور پر گجرات انتخابات میں انہیں کسی بھی طرح کا کوئی خطرہ نہیں مول لینا ہے کیونکہ گجرات انتخابات کو ملک میں ہونے والے 2019کے عام انتخابات کا سیمی فائنل کہا جا رہا ہے جبکہ کانگریس کی جانب سے کرناٹک انتخابات کو سیمی فائنل قرار دینے کی کوشش کی جارہی ہے۔ بھارتیہ جنتا پارٹی کا استدلال ہے کہ بی جے پی کیلئے گجرات 2019انتخابات کا سیمی فائنل ہے اور کرناٹک کے متعلق بھی بھارتیہ جنتا پارٹی پرامید ہے کیونکہ ان کی پارٹی کو گجرات میں کامیابی کا یقین ہے۔ گجرات کی کامیابی کے کرناٹک انتخابات پر اثرات کے متعلق بھارتیہ جنتا پارٹی کا کہنا ہے کہ گجرات کے نتائج نہ صرف کرناٹک بلکہ 2019 کے عام انتخابات پر بھی اثرانداز ہوں گے جبکہ کانگریس کا کہنا ہے کہ گجرات انتخابات کے دوران بھارتیہ جنتا پارٹی کی مقبولیت میں گراوٹ اور 2014 عام انتخابات کے نعروں اور وعدوں کا عدم تذکرہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی شکست کا باعث بن سکتا ہے اور اس کا بھرپور فائدہ کرناٹک اسمبلی انتخابات کے علاوہ 2019عام انتخابات کے دوران سیکولر جماعتوں کو ہوگا کیونکہ بھارتیہ جنتا پارٹی عوام سے کئے گئے وعدوں کو پورا کرنا میں ناکام ہو چکی ہے اور عوام اس بات کو سمجھنے لگے ہیں کہ بی جے پی صرف مذہب کے نام پر سیاست کے ذریعہ عوام کو گمراہ کرتے ہوئے اقتدار پر برقرار رہنا چاہتی ہے۔گجرات انتخابات کے نتائج کے بعد پیدا ہونے والے حالات کے متعلق دونوں قومی سیاسی جماعتوں کے علاوہ دیگر سیاسی پارٹیوں میں بھی تجسس پایا جاتا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT