Sunday , December 17 2017
Home / سیاسیات / گجرات انتخابات کی تواریخ، سی ای سی کی گٹھ جوڑ کی تردید

گجرات انتخابات کی تواریخ، سی ای سی کی گٹھ جوڑ کی تردید

نئی دہلی ۔ 25 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) الیکشن کمیشن نے آج اس کے اور حکومت کے درمیان کسی گٹھ جوڑ کی تردید کردی جس کے تحت گجرات انتخابات کے اعلان میں تاخیر کرتے ہوئے برسراقتدار پارٹی کو نئے پراجکٹس کا گجرات کیلئے اعلان کرنے کی مہلت دی گئی تھی۔ چیف الیکشن کمشنر اے کے جوتی نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کئی عناصر الیکشن کمیشن کے پیش نظر تھے جن کی بنیاد پر ہماچل پردیش اور گجرات کی رائے دہی کی تواریخ کا اعلان کیا گیا۔ انہوں نے برسراقتدار پارٹی کے ساتھ الیکشن کمیشن کے کسی بھی گٹھ جوڑ کی اطلاعات کی تردید کی۔ ان سے سوال کیا گیا تھا کہ اپوزیشن الزام عائد کررہی ہیکہ گجرات انتخابات کی تواریخ کے سلسلہ میں بی جے پی اور الیکشن کمیشن کے درمیان گٹھ جوڑ ہوا ہے۔ بی جے پی قائد ارون جیٹلی نے آج کانگریس کی مذمت کی کیونکہ اس نے الیکشن کمیشن پر گجرات انتخابات کے اعلان کے سلسلہ میں تنقید کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن ہندوستان کی ہارنے والی پارٹی کی الزامات سے خوفزدہ نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن پارٹی الیکشن کمیشن کی تعریف کررہی تھی کیونکہ اس نے حالیہ راجیہ سبھا انتخابات میں فیصلہ اس کے حق میں دیا تھا لیکن ہماچل پردیش کے ساتھ گجرات انتخابات کی تاریخ کے عدم اعلان پر اس نے الیکشن کمیشن پر الزامات عائد کرنے شروع کردیئے۔ دریں اثناء کانگریس پارٹی نے اوپنین پولس کی گجرات میں اشاعت پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ اس سے رائے دہندے متاثر ہوں گے۔ جنتادل (یو) کے ناراض قائد شرد یادو نے دریں اثناء گجرات انتخابات میں کانگریس کے ساتھ انتخابی اتحادکا اعلان کیا۔ شردیادو نے آج کہا کہ وہ اپوزیشن پارٹیوں میں کم سے کم انتشار کی تائید کریں گے جبکہ ان کا مقابلہ برسراقتدار بی جے پی سے ہے۔ انہوں نے کہاکہ متحدہ اپوزیشن برسراقتدار پارٹی سے مؤثرانداز میں مقابلہ کرسکتا ہے۔ شردیادو نے کہا کہ بی جے پی صرف 31 فیصد ووٹ حاصل کرسکے گی جبکہ اپوزیشن کو 2014ء عام انتخابات میں 69 فیصد ووٹ حاصل کئے تھے اور اگر اس بار اپوزیشن پارٹیوں میں اتحاد ہو تو وہ برسراقتدار آجائیں گے۔ قبل ازیں الیکشن کمیشن نے آج گجرات میں اسمبلی انتخابات کیلئے پروگرام کا اعلان کردیا جہاں بی جے پی گذشتہ 20 سال سے برسراقتدار ہے۔

TOPPOPULARRECENT