Wednesday , November 22 2017
Home / ہندوستان / گجرات فسادات مقدمہ ذکیہ جعفری کی درخواست پر ہائیکورٹ کافیصلہ ملتوی

گجرات فسادات مقدمہ ذکیہ جعفری کی درخواست پر ہائیکورٹ کافیصلہ ملتوی

احمدآباد۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) گجرات ہائیکورٹ نے مہلوک کانگریس لیڈر احسان جعفری کی بیوہ ذکیہ جعفری کی درخواست پر اپنا فیصلہ 21 اگست تک ملتوی کردیا۔ ذکیہ جعفری نے 2002ء فسادات مقدمات میں اس وقت کے چیف منسٹر نریندر مودی اور دیگر کو کلین چٹ برقرار رکھنے لوور کورٹ کے حکم کو چیلنج کیا تھا۔ جسٹس سونیا گوکانی نے ذکیہ جعفری، ایس آئی ٹی اور ریاستی حکومت کی نمائندگی کررہے وکلاء کو بتایا کہ وہ 21 اگست کو فیصلہ سنائیں گی۔ اس مقدمہ کی سماعت 3 جولائی کو ختم ہوئی۔ ہائیکورٹ نے اس سے پہلے کہا تھا کہ وہ 9 اگست کو فیصلہ سنائے گی۔ عدالت نے ذکیہ جعفری اور سماجی کارکن تیستا سیتلواد کی پیش کردہ درخواست نظرثانی پر سماعت کی تھی جس میں لوور کورٹ کے اس فیصلہ کو چیلنج کیا گیا جس میں 2002ء فسادات کے پس پردہ مبینہ طور پر ایک بڑی مجرمانہ سازش کے سلسلے میں ایس آئی ٹی کی کلین چٹ کو برقرار رکھا تھا۔ درخواست گذاروں نے ازسرنو تحقیقات کا بھی مطالبہ کیا۔ درخواست میں کہا گیا تھا کہ مودی اور 59 دیگر کو فسادات کے پس پردہ مجرمانہ سازش کا ملزم بنایا جائے۔ 28 فروری 2002ء کو احمدآباد کے گلبرگ سوسائٹی میں ہجوم نے 68 افراد بشمول احسان جعفری کو ہلاک کردیا تھا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT