Tuesday , September 18 2018
Home / Top Stories / گجرات میں اپنے نام سے مندر کی تعمیر پر نریندر مودی افسردہ

گجرات میں اپنے نام سے مندر کی تعمیر پر نریندر مودی افسردہ

نئی دہلی۔/12فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر اعظم نریندر مودی نے آج بتایا کہ انہیں یہ جان کر حیرت ہوئی کہ ان کی آبائی ریاست گجرات میں ان کا ایک مندر تعمیر کیا گیا ہے۔ تاہم وزیر اعظم کی خواہش پر ان کے پرجوش حامیوں نے اس منصوبہ سے دستبرداری اختیار کرلی اور یہ مندر ہٹادینے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مندر کے بارے میں میڈیا کی اطلاعات پر

نئی دہلی۔/12فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر اعظم نریندر مودی نے آج بتایا کہ انہیں یہ جان کر حیرت ہوئی کہ ان کی آبائی ریاست گجرات میں ان کا ایک مندر تعمیر کیا گیا ہے۔ تاہم وزیر اعظم کی خواہش پر ان کے پرجوش حامیوں نے اس منصوبہ سے دستبرداری اختیار کرلی اور یہ مندر ہٹادینے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مندر کے بارے میں میڈیا کی اطلاعات پر انہیں صدمہ پہنچا اور عوام سے کہا کہ اپنا وقت اور وسائل ان کے خواب ’’ کلین انڈیا ‘‘ کی تکمیل پر صرف کریں۔ وزیر اعظم نے بتایا کہ میرے نام پر ایک مندر کی تعمیر سے متعلق نیوز دیکھ کر میں چونک گیا اور یہ ہندوستان کی عظیم روایات کے خلاف ہے۔ انہوں نے اپنے ٹوئٹر پر کہا کہ اس طرح کے منادر کی تعمیر ہماری تہذیب و ثقافت کا حصہ نہیں ہے اور نہ ہی ایسا درس دیا گیا ہے۔ شخصی طور پر مجھے دکھ پہنچا اور جن لوگوں نے یہ کام کیا ہے انہیں باز آجانا چاہیئے۔

وزیر اعظم کا یہ پیام ان کے آبائی مقام پر فی الفور اثر کرگیا اور اوم یوا گروپ کے ارکان جنہوں نے راجکوٹ میں کاٹیا واڑ روڈ پر نریندر مودی کا مندر تعمیر کیا ہے اور 15فبروری کی افتتاحی تقریب کو منسوخ کردیا ہے اور بتایا کہ اب اس مقام پر بھارت ماتا کی مورتی نصب کی جائے گی۔ گروپ لیڈر رمیش اندھند نے بتایا کہ انہیں یہ جان کر تکلیف ہوئی کہ وزیر اعظم نے مندر کی تعمیر پر ناراضگی ظاہر کی ہے جس سے ان کے جذبات مجروح ہوئے ہیں اور اب مندر میں ایستادہ ان کی مورتی کو ڈھانک دیا جائے گا اور بہت جلد ہٹادیا بھی جائے گا۔ گروپ کے ایک اور رکن جیش پٹیل نے کہا کہ اب یہ مندر بھارت ماتا کو وقف کردیا جائے گا جس پر 7لاکھ روپئے کا صرفہ آئے گا۔ انہوں نے بتایا کہ وزیر اعظم کی نریندر مودی کے جذبات کا احترام کرتے ہوئے ان کی سوچھ بھارت مہم ’ کلین انڈیا ‘ کی بھرپور تائید کریں گے۔ بتایا جاتا ہے کہ کاٹیاواڑ گرام پنچایت نے 10سال قبل بھارت ماتا مندر تعمیر کرنے کیلئے 350 مربع گز کا ایک پلاٹ مذکورہ گروپ کو منظور کیا تھا لیکن گروپ نے بعد ازاں نریندر مودی کے نام سے مندر تعمیر کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

دریں اثناء لکھنؤ سے موصولہ اطلاعات کے بموجب گجرات میں وزیراعظم نریندر مودی کے مندر کی تعمیر کی اطلاعات پر اترپردیش کے وزیر، اعظم خاں نے سماج وادی پارٹی سربراہ ملائم سنگھ یادو کے نام پر ایک مندر تعمیر کرنے کی پیشکش کی ہے اور کہا کہ ان کے نام سے مندر کیوں نہیں بنایا جاسکتا۔ انہوں نے بتایا کہ میں نے نیتا جی ( ملائم سنگھ ) کے سامنے یہ تجویز پیش کی ہے کہ ان کے نام پر ایک مندر تعمیر کی جائے گی۔ اگر وہ آمادگی ظاہر کرتے ہیں تو فی الفور تعمیری کام شروع کردیا جائے گا۔ اپنے مطالبہ کو حق بجانب قراردیتے ہوئے اعظم خاں نے کہا کہ ملائم سنگھ ایک مقبول عام لیڈر ہیں اور ان کے حامیوں کی تعداد لاکھوں میں ہے، ایسے میں ان کے نام سے مندر کیوں نہیں بنایا جاسکتا۔ اعظم خاں کا یہ بیان ایسے وقت آیا ہے جب نریندر مودی کے حامیوں نے گجرات میں ان کے نام پر ایک مندر تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے اور اس مندر میں نریندر مودی کی ایک مورتی نصب کی جائے گی جس کی افتتاحی تقریب 16فبروری کو مقرر کی گئی ہے۔ لیکن وزیراعظم کی جانب سے اعتراض پر اس منصوبہ سے دستبرداری اختیار کرلی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT