Sunday , January 21 2018
Home / ہندوستان / گجرات میں بی سی طالبات کو زعفرانی رنگ کی سیکلوںکی فراہمی

گجرات میں بی سی طالبات کو زعفرانی رنگ کی سیکلوںکی فراہمی

گاندھی نگر 3 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت گجرات کی جانب سے بی سی طبقات کی طالبات کو زعفرانی رنگ کی سیکلیں فراہم کرنے پر ہنگامہ پیدا ہوگیا ہے اور کانگریس نے اس اقدام پر تنقید کرتے ہوئے اسے سیاسی پروپگنڈہ قرار دیا ہے جبکہ برسر اقتدار بی جے پی نے کہا کہ یہ حفاطتی اقدام کے طور پر کیا گیا ہے تاکہ رات کے اوقات میں اس رنگ کو بہتر طور پر دیکھا

گاندھی نگر 3 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت گجرات کی جانب سے بی سی طبقات کی طالبات کو زعفرانی رنگ کی سیکلیں فراہم کرنے پر ہنگامہ پیدا ہوگیا ہے اور کانگریس نے اس اقدام پر تنقید کرتے ہوئے اسے سیاسی پروپگنڈہ قرار دیا ہے جبکہ برسر اقتدار بی جے پی نے کہا کہ یہ حفاطتی اقدام کے طور پر کیا گیا ہے تاکہ رات کے اوقات میں اس رنگ کو بہتر طور پر دیکھا جاسکے ۔ حکومت گجرات نے روایتی سیاہ رنگ کی سائیکلیں طالبات میں تقسیم کرنے کی بجائے زعفرانی رنگ کی سائیکلیں اسکولی طالبات کو اپنی ایک اسکیم کے تحت فراہم کی ہیں۔ کانگریس کے رکن اسمبلی ارون سنہہ رانا نے یہ مسئلہ موضوع بحث بنایا اور انہوں نے حکومت کی جانب سے سائیکلوں کی تقسیم کی اسکیم پر اسمبلی کے بجٹ اجلاس کے دوران سوال کیا ۔ رانا نے حکومت سے سوال کیا کہ بھڑوچ ضلع میں 2013 – 14 میں اسے پسماندہ طبقات کی طالبات کو سائیکلیں فراہم کرنے کیلئے کتنی درخواستیں حاصل ہوئی ہیں۔ اس وسال کا جواب دیتے ہوئے گجرات کے وزیر برائے سماجی انصاف و امپاورمنٹ مسٹر رمن لال ووہرہ نے ادعا کیا کہ جملہ 1,703 درخواستیں موصول ہوئی تھیں ان میں 1,521 درخواتیں کو منظوری بھی دیدی گئی ہے اور ان تمام کو سائیکلیں بھی فراہم کردی گئی ہیں۔

ایک اور ضمنی سوال میں مسٹر رانا نے سائیکلوں کے رنگ کی تفصیل فراہم کرنے کو کہا ۔ اپنے جواب میں مسٹر ووہرہ نے کہا کہ یہ سائیکلیں زعفرانی رنگ کی ہیں اور حکومت نے کالے رنگ کی سائیکلیں حاصل کرنے سے گریز کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ زعفرانی رنگ راتوں میں اچھی طرح دیکھا جاسکتا ہے سیاہ رنگ کو دیکھنے میں مشکل ہوتی ہے ۔ اس لئے جب یہ لڑکیاں راتوں میں سائیکل چلائیں گی تو دوسری گاڑیوں کو انہیں دیکھنے میں مشکل نہیں ہوگی ۔

یہ رنگ محض لڑکیوں کے تحفظ اور حفاظت کیلئے منتخب کیا گیا ہے ۔ چونکہ بی جے پی بھگوا رنگ اختیار کرتی ہے اس لئے ایوان یمں کانگریس کے کئی ارکان نے شور پکارا شروع کردیا اور ہنگامہ آرائی کی ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ حکومت سیاسی پروپگنڈہ کر رہی ہے ۔ کانگریس رکن اسمبلی مسٹر شیلیش پرمار نے مسٹر ووہرہ کی وضاحت کو مضحکہ خیز قرار دیا اور سوال کیا کہ آیا گجرات میں جتنی بھی سائیکلیں فروخت کی گئی ہیں ان سب کو حکومت زعفرانی رنگ میں تبدیل کردیگی ۔ مسٹر ووہرہ نے اپنے جواب میں حکومت کے کسی مقصد سے انکار کیا اور کہا کہ گاڑیاں اور سائیکلیں کئی رنگوں میں فروخت کی جاتی ہیں ایسے میں اسے خریدنے والوں کا اختیار ہوتا ہے وہ جو چاہے رنگ پسند کریں۔ اس کا حکومت سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔ کانگریس ارکان وزیر کے اس بیان سے مطمئن نہیں دکھائی دے رہے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT