Wednesday , September 26 2018
Home / Top Stories / گجرات میں دلت جہد کار کی خودسوزی ، دواخانہ پر عوام کا احتجاج

گجرات میں دلت جہد کار کی خودسوزی ، دواخانہ پر عوام کا احتجاج

ارکان خاندان کا نعش لینے سے انکار ، احتجاج شروع کرنے میوانی کی دھمکی
احمد آباد ۔ /17 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) گجرات میں ایک دلت کارکن بھانو بھائی وانکر کے ارکان خاندان نے اپنے مطالبات کی عدم پذیرائی تک اس کی نعش حاصل کرنے سے انکار کردیا ہے ، بغرض پوسٹ مارٹم گاندھی نگر سیول ہاسپٹل لائی گئی اور اس خاندان کی تائید و حمایت میں ہزاروں دلت احتجاجی ہاسپٹل کے باہر جمع ہوگئے تھے ۔ وانکر نے جمعرات کو پٹن کلکٹر آفس کے روبرو خودسوزی کرلیا تھا اور دوسرے دن احمد آباد کے ایک خانگی ہاسپٹل میں زخموں سے جانبر نہ ہوسکا ۔ دلت لیڈر اور آزاد رکن اسمبلی جگنیش میوانی اور اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر پریش دھنانی نے گاندھی نگر سیول ہاسپٹل پہونچکر وانکر کے افراد خاندان سے ملاقات کی ۔ وانکر بھی میوانی کی راشٹریہ دلت ادھیکار منچ میں شامل تھا ۔ دلت احتجاجیوں کا ڈی کے بی جے پی رکن اسمبلی کرشن سولنکی کو جو وہاں ملاقات کے لئے پہونچے تھے واپس جانے پر مجبور کردیا ۔ جگنیش میوانی نے دھمکی دی ہے کہ مطالبات کی عدم یکسوئی پر ریاستی حکومت کے خلاف دلتوں کا احتجاج شروع کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ وانکر کی موت کی تحقیقات کے لئے دلتوں پر مشتمل خصوصی تحقیقاتی ٹیم کی تشکیل اور موت کے ذمہ داروں کو فی الفور سخت سزائیں دینے کا مطالبہ کیا ہے ۔ میوانی نے کہا کہ ’’حکومت کی طرف سے مطالبات قبول نہیں کئے جانے کی صورت میں کل احتجاج کے بارے میں فیصلہ کیا جائے گا ‘‘ ۔ متوفی وانکر اس علاقہ میں ایک بے زمین خاتون کھیت مزدور ہیمابین وانکر کے لئے جدوجہد کررہا تھا ۔ حکام نے ہیمابین کے خاندان سے 2013 ء میں 22,236 روپئے وصول کرنے کے باوجود اراضی فراہم نہیں کیا تھا ۔ اس دلت خاندان مزدور نے بھی وانکر کے ساتھ خود سوزی کی دھمکی دی تھی ۔ پٹن کلکٹریٹ کے باہر سخت سکیوریٹی کے باوجود بھانو بھائی وانکر نے خود کو آگ لگالیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT