Wednesday , July 18 2018
Home / ہندوستان / گجرات میں شکست سے بچنے جی ایس ٹی شرحوں میں کٹوتی

گجرات میں شکست سے بچنے جی ایس ٹی شرحوں میں کٹوتی

مفاہمت کا دعویٰ نہ کرنے والے اچانک کیوں جھک گئے، شیوسینا کا استفسار
ممبئی ۔ 13 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکز نے جی ایس ٹی شرحوں میں کٹوتی اس لئے کی ہے کہ گجرات چناؤ میں ہزیمت سے بچا جاسکے، شیوسینا نے آج یہ دعویٰ کرتے ہوئے بی جے پی کو کسی بھی مسئلہ پر سیاسی فائدہ اٹھانے اور نام نمود کے اقدامات کرنے میں ماہر قرار دیا۔ گڈس اینڈ سرویسیس ٹیکس میں ابھی تک کی سب سے بڑی تبدیلی میں زائد از 200 اشیاء پر ٹیکس شرحوں میں 10 نومبر کو کٹوتی کرتے ہوئے صارفین اور تاجرین کو راحت پہنچائی گئی۔ ان میں سے 178 ایٹمس روزمرہ استعمال کے ہیں جنہیں 28 فیصد کے اعلیٰ ترین ٹیکس زمرہ سے ہٹا کر 18 فیصد کے زمرہ میں منتقل کردیا گیا جبکہ تمام ریسٹورنٹس کیلئے 5 فیصد ٹیکس کی یکساں شرح طئے کی گئی۔ اس اقدام کے وقت پر سوال اٹھاتے ہوئے شیوسینا نے مرکزی حکومت سے استفسار کیا کہ اس نے ابھی کیوں گھٹنے ٹیک دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ پارٹی ترجمان سامنا کے اداریہ میں کہا گیا کہ یہ لوگ سیاسی فائدہ اٹھانے اور تشہیری کام کرنے کے ماہر ہیں۔ حکومت نے یہ اقدام کیونکر کیا جبکہ اس نے کہہ دیا تھا کہ جی ایس ٹی کے مسئلہ کوئی مفاہمت نہیں کی جائے گی اور احتجاجوں پر توجہ نہیں دی جائے گی لیکن اب وہ جھک گئے ہیں۔ اس کا جواب یہ ہیکہ گجرات چناؤ میں انہیں سخت مسابقت کا سامنا ہورہا ہے۔ شیوسینا نے دعویٰ کیا کہ بی جے پی قائدین کو گجرات کے دیہات میں داخلہ کی اجازت نہیں دی جارہی ہے اور پریس کانفرنس منعقد کرنے سے بھی روکا جارہا ہے حتیٰ کہ ان کے پوسٹرس نکال دیئے جارہے ہیں۔ این ڈی اے کی حلیف جماعت پارٹی شیوسینا نے مزید کہا کہ مختلف ریاستوں کے چیف منسٹرس کے ساتھ مرکزی وزراء گجرات کی انتخابی مہم میں حصہ لینے کیلئے ملک کے امور کو لیت ولعل میں ڈال دیں گے اور اس سلسلہ میں کافی رقم خرچ بھی کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT