Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / گجرات میں مردہ جانوروں کو ہٹانے کا مسئلہ

گجرات میں مردہ جانوروں کو ہٹانے کا مسئلہ

دلت تنظیم کی درخواست پر ریاستی حکومت کو ہائی کورٹ کی نوٹس
احمدآباد۔3 اگست (سیاست ڈاٹ کام) گجرات ہائی کورٹ نے آج مفاد عامہ کی درخواست پر ریاستی حکومت کو ایک نوٹس جاری کی ہے جس میں منظم طریقہ پر مردہ گائیوں کو ٹھانے لگانے اور اونا قصبہ میں دلتوں پر حملے جیسے واقعات کی روک تھام کے لئے گائو رکشکوں کے خلاف پیش بندی کارروائی کے لئے حکومت کو ہدایت دینے کی گزارش کی گئی ہے۔ چیف جسٹس اور سبھاش ریڈی اور جسٹس وی ایم پنچولی پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے ریاستی حکومت ایڈیشنل چیف سکریٹری محکمہ داخلہ، اور پرنسپال سکریٹری محکمہ پنچایت، دیہی امکنہ اور دیہی ترقیات کو نوٹس جاری کی ہے جبکہ اس معاملہ پر سماعت کی تاریخ 8 ستمبر مقرر کی گئی ہے۔  ایک غیر سرکاری تنظیم امبیڈکر کارروائی کے صدر رتناوورا نے یہ مفاد عامہ کی درخواست داخل کی ہے جو کہ دلتوں اور دبے کچلے طبقات کیلئے کام کرتی ہے جس میں انہوں نے یہ دعوی کیا ہے کہ مردہ جانوروں کو منظم طریقہ پر ٹھاکانہ لگانے کے لئے ریاستی حکومت نے گرام پنچایتوں کو کوئی رہنمایانہ خطوط یا سرکیولر جاری نہیں کیا ہے اور ریاستی محکمہ داخلہ کو یہ ہدایت دی جائے کہ تحفظ گائے کے نام پر غنڈوں کی غیر قانونی سرگرمیاں پر پابندی عائد کی جائے۔

 

مہوبہ میں دوشیزہ کی عصمت دری
مہوبہ۔  3اگست (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش میں ضلع مہوبہ کے کلپھاڈ علاقے میں ایک دوشیزہ کی عصمت دری کئے جانے کا معاملہ روشنی میں آیا ہے ۔ ڈپٹی پولس سپرنٹنڈنٹ ونود سنگھ نے آج یہاں بتایا کہ گزشتہ 27 جولائی کو وجیے پور انڈوارہ کے باشندے دیویندر کمار نامی بدمعاش نے مندر جاتے ہوئے دوشیزہ کو اپنے گھر لے گیا اور طفنچے کی نوک پر اس کی عصمت دری کی۔ ملزم کی طرف سے متاثرہ خاندان کے گھر کو آگ لگاکر زندہ جلا دینے کی دھمکی دی جا رہی تھی۔ اس خوف سے انہوں نے واقعہ کی اطلاع دیر سے پولس کو دی۔ متاثرہ دوشیزہ کی تحریر پر دیویندر کمار کیخلاف دفعہ 376اور پوسکو ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔ دوشیزہ کا طبی معائنہ کرایا گیا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT