Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / گجرات میں 2ججس رشوت حاصل کرنے پر گرفتار

گجرات میں 2ججس رشوت حاصل کرنے پر گرفتار

ویجلنس سیل کی تحقیقات کے بعد ہائی کورٹ کی کارروائی
احمد آباد؍ ولساڈ ۔/11ستمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) گجرات ہائی کورٹ کے ویجلنس سیل نے آج قانون انسداد رشوت ستانی کے تحت 2ججوں کو گرفتار کرلیا جنہیں گذشتہ ماہ 2014ء میں واپی کورٹ میں خدمات کے دوران بعض مقدمات کی یکسوئی کیلئے رشوت حاصل کرنے کے الزام میں معطل کردیا گیا تھا ۔ ججس اے ڈی آچاریہ اور پی ڈی انعامدار کو مقدمہ کی یکسوئی کیلئے جانبداری برتنے کیلئے بات چیت کرتے ہوئے کیمرہ میں قید کرلیا گیا تھا انہیں آج ولساد کورٹ نے 14یوم کیلئے عدالتی تحویل میں دے دیا ہے ۔ رجسٹرار جنرل ہائی کورٹ بی این کرپا کے بموجب ویجلنس سیل نے بعد تحقیقات رشوت ستانی کیس میں ایک ایف آئی آر درج کیا ہے جبکہ واپی کے ایک ایڈوکیٹ جگت پاٹل نے یہ شکایت کی تھی کہ مذکورہ ججس رشوت لے کر فیصلہ صادر کررہے ہیں۔ انہوں نے عدالت کے کمرہ میں ایک خفیہ کیمرہ نصب کیا تھا جس میں فبروری تا اپریل 2014ء کے دوران ان کی سرگرمیوں کی فلمبندی کرلی گئی تھی۔ اس فلم میں دیکھا گیا کہ یہ ججس وکلاء کے ٹیلی فون پر جانبدارانہ فیصلہ صادر کرنے کیلئے رقمی معاملت کی بات چیت کررہے ہیں۔ ویجلنس سیل نے تحقیقات میں یہ بھی انکشاف کیا کہ ان ججوں نے عدالت کے ریکارڈس کو تبدیل کرتے ہوئے جعلی دستاویزات کو اصلی ثابت کرنے کیلئے فیصلے سنائے ہیں جس کے بعد ہائی کورٹ نے گزشتہ ماہ انہیں خدمات سے معطل کردیا تھا جبکہ دیگر 10افراد بشمول ایک اسٹینو گرافربی ڈی شرمیلی، ایک کلرک بی جی پرجاپتی اور 8وکلاء کے خلاف ایف آئی آر درج کیا گیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT