Wednesday , December 12 2018

گجرات کے فرض شناس پولیس عہدیدار سبکدوش

احمدآباد 14 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) انڈین پولیس سرویس سے قبل ازوقت سبکدوشی اختیار کرنے والے راہول شرما جنھوں نے 2002 ء کے فسادات کی تحقیقات پر حکومت گجرات کے خلاف نبرد آزما ہوگئے تھے، بحیثیت وکیل اپنا نام اندراج کروانے کیلئے بار کونسل آف گجرات کو ایک درخواست پیش کی ہے۔ کونسل کے ممبر انیل کیلا نے بتایا کہ ان کی درخواست پر فیصلہ ہماری ا

احمدآباد 14 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) انڈین پولیس سرویس سے قبل ازوقت سبکدوشی اختیار کرنے والے راہول شرما جنھوں نے 2002 ء کے فسادات کی تحقیقات پر حکومت گجرات کے خلاف نبرد آزما ہوگئے تھے، بحیثیت وکیل اپنا نام اندراج کروانے کیلئے بار کونسل آف گجرات کو ایک درخواست پیش کی ہے۔ کونسل کے ممبر انیل کیلا نے بتایا کہ ان کی درخواست پر فیصلہ ہماری انرولمینٹ کمیٹی کرے گی۔ مسٹر راہول شرما 1992 ء بیاچ کے گجرات کیڈر کے آفیسر ہیں۔ جسٹس جی ٹی ناناوتی کمیشن کو بعض اہم اطلاعات فراہم کی تھیں جس نے سال 2002 ء میں مابعد گودھرا فسادات کی تحقیقات کی تھی۔ اس اقدام پر حکومت گجرات نے ان کے خلاف چارج شیٹ جاری کی تھی۔ مسٹر شرما نے بتایا کہ 23 سالہ طویل خدمات کے دوران کا سابقہ قانون سے رہا لہذا وہ اب وکیل کی حیثیت سے خدمات انجام دینا چاہتے ہیں۔ اُنھوں نے بتایا کہ وہ بنیادی انجینئرنگ کے طالب علم رہے۔ یہی وجہ ہے کہ اُنھوں نے فسادات کی ایک سی ڈی بناکر ناناوتی کمیشن کو فراہم کی تھی۔ اُنھوں نے بتایا کہ وہ نومبر 2014 ء میں سبکدوش ہونا چاہتے تھے لیکن گجرات کے محکمہ داخلہ نے انھیں گزشتہ ماہ ذمہ داری سے آزاد کردیا ہے۔ ان کا آخری رینک ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولیس تھا۔ مسٹر شرما نے مذکورہ سی ڈی میں بعض راز کی اطلاعات ریکارڈ کی تھی۔ جس سے یہ پتہ چلتا ہے کہ فسادات کے دوران بعض وزراء سرکاری عہدیدار اور بجرنگ دل اور وی ایچ پی کے قائدین کہاں کہاں تھے۔

TOPPOPULARRECENT