Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / گرد و غبار سے کمسن بچوں کی نشوونما میں رکاوٹ کا باعث

گرد و غبار سے کمسن بچوں کی نشوونما میں رکاوٹ کا باعث

فضائی آلودگی سے حفاظت کرنے کی ضرورت ، تحقیق کے بعد ماہرین امراض اطفال کا انتباہ
حیدرآباد۔14جنوری (سیاست نیوز) گرد اور دھول کے سبب ہونے والی الرجی بچوں میں برتاؤ اور رویہ میں تبدیلی کا سبب بن سکتی ہے اور اس کا اثر بچوں کی نشو نما پر بھی پڑتا ہے ۔ حالیہ عرصہ میں کی گئی تحقیق میں اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ گرد کے سبب ہونے والی الرجی سے بچوں کی ناک بہنا ہے اور انہیں کھانسی رہنا معمول بن جاتا ہے ساتھ ہی مسلسل الرجی کے سبب ان کی تعلیم پر بھی اثر پڑنے لگتا ہے۔ تحقیق کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ 40 فیصد بچے گرد اور دھول کے سبب ہونے والے اثرات سے متاثر ہیں اور انہیں اس الرجی کے سبب مسلسل دھول اور فضائی آلودگی سے محفوظ رکھنے کی ضرورت ہے کیونکہ انہیں اس الرجی سے بچانے میں ناکامی کی صورت میں متاثرہ بچوں کے برتاؤ میں تبدیلی آسکتی ہے۔ ماہرین امراض اطفا ل کا کہناہے کہ گرد اور دھول کے سبب بچوں میں پھیلنے والی عام بیماریاں الرجی میں تبدیل ہوجاتی ہیں اور ان الرجی سے بچنے کیلئے ضروری ہے کہ دھول اور گرد سے بچوں کو محفوظ رکھنے کے اقدامات کئے جائیں ۔ بتدریج یہ شکایت عارضہ تنفس میں تبدیل ہونے لگتی ہے اور اس تبدیلی کے نتیجہ میں بچوں کی چڑچڑاہٹ میں اضافہ ہونے لگتا ہے جو کہ انہیں ان کی تعلیم پر توجہ دینے میں رکاوٹ پیدا کرنے لگتا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ اگر اس مسئلہ کو نظر انداز کیا جاتا رہا تو بچوں میں پھیپھڑوں کے عارضہ بھی پھیلنے لگتے ہیں ۔ گرد‘ دھول اور گاڑیوں سے خارج ہونے والے کثیف دھوئیں کے سبب بھی یہ عارضے لاحق ہونے لگتے ہیں اسی لئے ماحول کو فضائی آلودگی سے پاک بنانے پر توجہ مرکوز کی جانی ضروری ہے کیونکہ یہ مسئلہ معصوم بچوں کی صحت سے مربوط ہے اور جب تک پاک و صاف ماحول کی فراہمی یقینی نہیں بنائی جاتی اس وقت تک بچوں کے برتاؤ کو بہتر بنانے کے علاوہ ان کی بہتر تعلیم و تربیت کے متعلق سنجیدہ اقدامات نہیں کئے جاسکتے۔

TOPPOPULARRECENT