Tuesday , July 17 2018
Home / شہر کی خبریں / گرمائی تعطیلات بچوں کی اخلاقی تربیت کا بہترین موقع

گرمائی تعطیلات بچوں کی اخلاقی تربیت کا بہترین موقع

گھریلو کاموں کا حصہ بنانے کے علاوہ ہنر مندی پر توجہ دیں تو بہتر نمونہ ثابت ہوں گے
حیدرآباد۔4اپریل (سیاست نیوز) گرمائی تعطیلات بچوں کی تربیت کیلئے والدین بہترین سرمایہ ثابت ہو سکتے ہیں اگر والدین ان تعطیلات میں اپنے بچوں پر توجہ دیتے ہوئے ان میں تبدیلی لانا چاہتے ہیں تو ایساممکن بنایا جا سکتا ہے ۔ گھریلو کام کاج کی تربیت اور اپنے کام خود کرنے کا عادی بنانے کیلئے والدین گرمائی تعطیلات کا صحیح استعمال کرسکتے ہیں لیکن اکثر یہ دیکھا جاتا ہے کہ والدین گرمائی تعطیلات میں بچوں پر توجہ مبذول نہ کرتے ہوئے انہیں ضائع کردیتے ہیں اور بچوں کی تربیت ‘ عادات و اطوار کے متعلق شکایات کرتے رہتے ہیں۔ ماضی قریب میں جب اسکولوں میں تعلیم کے ساتھ ساتھ بچوں کی اخلاقی تربیت کے علاوہ انہیں مصروف رکھنے اور کھیل کود کی سرگرمیوں کا حصہ بنایا جاتا تھا اس وقت تک گرمائی تعطیلات میں ہنر سیکھنے پر توجہ مرکوز کی جاتی تھی اور بعض گھرانوں میں تعطیلات کے دوران تفریح کا طریقہ کار ہوا کرتا تھا لیکن اب جبکہ اسکول میں بچوں پر اس قدر تعلیم کا بوجھ ہے کہ وہ تعطیلات کو نعمت سمجھ رہے ہیں تو ایسی صورت میں ان میں اخلاقیات کے علاوہ دینی علوم کی تربیت کی فراہمی پر توجہ مرکوز کرنا والدین کی ذمہ داری ہے۔تعطیلات کے دوران اگر بچوں میں خود کو خود کے کام کرنے کا عادی بنایا جائے اور ان کی حرکات و سکنات کا جائزہ لیتے ہوئے حسب ضرورت ان میں تبدیلی لائی جائے تو والدین کو بچوںکے مستقبل کے متعلق فکر مند رہنے کی ضرورت باقی نہیں رہی گی۔ بیشتر گھرانوں میں بچوں کو اس بات کا بھی علم نہیں ہوتا کہ ان کا بستر کون اٹھاتا ہے اور ان کی جانب سے استعمال کی جانے والی پلیٹ و دیگر اشیاء کی صفائی کون کرتا ہے بلکہ وہ زمانۂ طالب علمی کے ایسے مصروف ترین دور سے گذر رہے ہیں کہ انہیں اپنی تعلیمی مصروفیات کے علاوہ کسی بھی چیز کی فکر نہیں ہے بلکہ اگر دن بھر تعلیمی مصروفیات سے کچھ وقت میسر آجاتا ہے تو ایسی صورت میں وہ یوٹیوب یا کسی اور موبائیل گیم کی نذر ہوجاتا ہے ۔ اسی لئے اولیائے طلبہ وسرپرستوں کو چاہئے کہ وہ گرمائی تعطیلات کے دوران اپنے بچوں کو ان گھریلو سرگرمیوں کا حصہ بنانے کی کوشش کریں جن کا ان کے مستقبل میں انہیں روز سامنا ہوگا اور انہیں ان گھریلو کام کاج کی عادت ڈالیں جو انہیں کرنے ہی پڑتے ہیں ۔ گرمائی تعطیلات میں سمر کیمپ کے دوران ہنر مندی سے متعلق سرگرمیوں میں حصہ لینے کے علاوہ بچوں کو دینی تعلیم کی فراہمی کے ساتھ ساتھ اخلاقیات کی تعلیم پر بھی توجہ دیتے ہوئے انہیں فرائض کے متعلق واقف کروایاجاناچاہئے تاکہ انہیں اس بات کا علم رہے کہ ان پر کیا فرض ہے کیونکہ عام طور پر جو تربیت ہو رہی ہے اس میں بچوں میں صرف یہ احساس پیدا ہونے لگا ہے کہ ان کا اسکول جانا ہی سب سے اہم ہے اور اس سے بڑھ کر کوئی بات اہمیت کی حامل نہیں ہے ۔

TOPPOPULARRECENT