Tuesday , August 14 2018
Home / شہر کی خبریں / گرمائی تعطیلات میں سیر و تفریح کیلئے خصوصی ٹرینوں کی قلت

گرمائی تعطیلات میں سیر و تفریح کیلئے خصوصی ٹرینوں کی قلت

سیاحوں کیلئے مسائل، ساؤتھ سنٹرل ریلوے کو فوری توجہ دینے کی ضرورت
حیدرآباد ۔ /15 اپریل (سیاست نیوز) موسم گرما کی تعطیلات شروع ہوچکی ہیں ۔ والدین اور طلبہ تعطیلات سے لطف اندوز ہونے کیلئے سیر و تفریح اور رشتہ داروں کے پاس جانے کیلئے مختلف مقامات کا سفر کرتے ہیں ۔ مگر انہیں سفر کیلئے نہ ہی محکمہ آر ٹی سی اور نہ ہی محکمہ ریلوے کی جانب سے کوئی انتظامات کئے جارہے ہیں ، سکندرآباد ، نامپلی اور کاچی گوڑہ سے مختلف مقامات کو روانہ ہونے والی تمام ریلوں میں ویٹنگ لسٹس بے حد طویل ہیں لہذا خصوصی ٹرینیں یا زائد برتھ کے انتظام کے بغیر شہریان شہر سے باہر نہیں جاسکیں گے ۔ مگر تاحال ساؤتھ سنٹرل ریلوے نے اس جانب کوئی توجہ ہی نہیں دی ہے ۔ حالانکہ ہر سال ساؤتھ سنٹرل ریلوے کی جانب سے ایام تعطیلات مختلف تفریحی مقامات کیلئے مسافرین کی تعداد کو دیکھتے ہوئے چارجس میں اضافہ کئے بغیر خصوصی ریلیں اور زائد بوگیوں کا انتظام کیا جاتا تھا جس کی وجہ سے شہریان کیلئے سفر کرنا آسان تھا ۔ حیدرآباد ، سکندرآباد اور کاچی گوڑہ ریلوے اسٹیشنوں کے ذریعہ روزانہ 3.5 لاکھ مسافرین کی آمد و رفت ہوتی ہے اور گرمائی تعطیلات میں اس تعداد میں 70-50 ہزار مسافرین کے اضافے کا اندازہ لگایا جارہا ہے جس کی وجہ سے آئندہ ماہ مئی سے مسافرین کی تعداد میں شدید اضافہ ہوسکتا ہے جبکہ ہر سال مسافرین کی تعداد کو دیکھتے ہوئے ساؤتھ سنٹرل ریلوے کی جانب سے 650-450 خصوصی ٹرینیں چلائی جاتی ہیں اور حیدرآباد سے بھی 200 سے زائد ٹرینیں چلائی جاتی ہیں مگر اس مرتبہ خصوصی ریلوں کا کوئی پتہ ہی نہیں ہے جبکہ روزانہ چلائی جانے والی ریلوں میں آئندہ ماہ مئی کے اواخر تک ویٹنگ لسٹ ہی چلارہی ہے ۔ موسم گرما کی وجہ سے مسافرین اے سی برتوں میں ہی سفر کو ترجیح دے رہے ہیں جس کی وجہ سے سلیپر کلاس کے مقابلہ تھرڈ اے سی برتھوں کی مانگ ہی زیادہ ہے مگر مسافرین کی تعداد کے مطابق تھرڈ اے سی بوگیاں نہ ہونے کی وجہ سے مسافرین کو مشکلات درپیش ہورہی ہیں اور مسافرین کی مانگ ہے کہ روزانہ چلائی جانے والی ریلوں میں زائد تھرڈ اے سی بوگیاں لگائی جائیں ۔ واضح ہو کہ تاحال آر ٹی سی نے بھی موسم گرما کے سفر سے متعلق کوئی شیڈول جاری نہیں کیا ہے ۔ حالانکہ ہر سال عہدیداران مسافرین کی تعداد کو مدنظر رکھتے ہوئے 2000-1500 خصوصی بسیں چلاتے تھے مگر امسال تاحال ایسا کوئی شیڈول جاری ہی نہیں کیا ہے ۔ حیدرآباد سے وجئے و اڑہ ، کرنول ، وشاکھاپٹنم ، کاکیناڈا ، املاپورم ، کڑپہ ، چتور ، تروپتی ، شرڈی ، بنگلور اور دیگر مقامات کے مسافرین کی تعداد بہت زیادہ ہوتی ہے ۔ حالانکہ عام دنوں میں املی بن اور جوبلی بس اسٹیشنوں سے روزانہ ایک لاکھ مسافرین تو شہر کے مختلف مقامات سے مزید 10 ہزار مسافرین سفر کرتے ہیں اور آئندہ ماہ مئی سے اس تعداد میں روزانہ 20-10 ہزار مسافرین کا اضافہ ہونے والا ہے ۔ مگر تاحال نہ ہی تلنگانہ آر ٹی سی اور نہ ہی آندھرا آر ٹی سی نے خصوصی بسوں کو چلانے کا اعلان کیا ہے ۔ لہذا مسافرین کا مطالبہ ہے کہ ساؤتھ سنٹرل ریلوے اور دونوں ریاستی آر ٹی سی کی جانب سے خصوصی ریلوں اور بسوں کو چلایا جائے ۔

TOPPOPULARRECENT